صعدہ: عبدالملک الحوثی اور اس کے چچا زاد بھائی کی ملیشیاؤں کے بیچ شدید لڑائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے صوبے صعدہ میں قبائلی ذرائع نے بتایا ہے کہ وسطی ضلعے سحار میں آل حمیدان کے علاقے میں حوثیوں کے سرغنے عبدالملک الحوثی کے حامیوں اور اس کے چچا کے بیٹے محمد عبدالعظیم الحوثی کے حامیوں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئی ہیں۔

ذرائع نے واضح کیا کہ دو روز قبل یہ جھڑپیں اُس وقت شروع ہوئیں جب عبدالملک الحوثی کی ملیشیا نے اپنے چھاپوں اور گرفتاریوں کی مہم میں محمد عبدالعظیم الحوثی کے ہمنواؤں کو نشانہ بنایا۔ یاد رہے کہ محمد عبدالعظیم الحوثی صعدہ صوبے میں اہم ترین زیدی علماء میں سے اور عبدالملک الحوثی کی جماعت کا مرکزی مخالف ہے۔

ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ جھڑپوں کے نتیجے میں محمد عبدالعظیم الحوثی کے حامیوں میں سے 30 افراد ہلاک ہو گئے۔ عبدالملک الحوثی کی ملیشیا کی جانب سے آل حمیدان کے علاقے کے دیہات پر اندھادھند گولہ باری کے نتیجے میں موت کی نیند سونے والوں میں بچے اور عورتیں بھی شامل ہیں۔ علاوہ ازیں اس دوران متعدد گھروں کو دھماکے سے تباہ کر دیا گیا۔ محمد عبدالعظیم کے حامی عناصر ابھی تک علاقے میں مورچہ بند ہیں اور عبدالملک الحوثی کی ملیشیا کے خلاف بھرپور مزاحمت کر رہے ہیں۔

ادھر محمد عبدالعظیم نے ایک بیان میں اپنے تمام پیروکاروں اور حامیوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ آل حمیدان کے علاقے کے لوگوں کو بچانے کے لیے فوری مداخلت کریں۔ بیان کے مطابق باغی حوثی ملیشیا نے علاقے کا محاصرہ کیا ہوا ہے اور وہ لوگوں کی موجودگی میں اُن کے گھروں پر گولہ باری کر رہی ہے۔

یاد رہے کہ محمد عبدالعظیم الحوثی یمن میں زیدی فرقے کا ایک اہم ترین عالم ہے۔ وہ یمن کے امور میں ایران کی مداخلت اور زیدی فرقے کو ایران کے مفادات کے کام میں لانے کی سخت مخالفت کرتا ہے۔

عبدالعظیم الحوثی کے حامی اور پیروکار یمن کے مختلف علاقوں میں پائے جاتے ہیں۔ ان میں صعدہ، صنعاء، عمران، حجہ اور ذمار شامل ہیں۔ عبدالعظیم کے حامیوں کی اس سے پہلے بھی مران اور سحار کے علاقوں میں حوثی باغی تحریک کے عناصر کے ساتھ جھڑپیں ہو چکی ہیں۔

سحار ضلعے میں آل مسعود کا علاقہ محمد عبدالعظیم الحوثی کا مرکزی گڑھ شمار کیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں