.

استنبول میں سعودی قونصل خانے میں خاشقجی کی عدم موجودگی کے ثبوت کی وڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

استنبول میں سعودی قونصل خانے کے اندر کی ایک وڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ سعودی شہری جمال خاشقجی قونصل خانے میں موجود نہیں ہے۔

دوسری جانب استنبول میں سعودی قونصل جنرل محمد العتیبی نے ایک بار پھر اس موقف کو دہرایا ہے کہ جمال خاشقجی قونصل خانے کی عمارت میں نہیں ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ترکی میں سعودی سفارت اور قونصل خانے لاپتہ شہری کی تلاش کے لیے کام کر رہے ہیں۔

ہفتے کے روز برطانوی خبر رساں ایجنسی کو دیے گئے ایک انٹرویو میں العتیبی کا کہنا تھا کہ "میں یہ تصدیق کرنا چاہتا ہوں کہ سعودی شہری خاشقجی قونصل خانے میں موجود نہیں ہے اور نہ وہ مملکت میں ہے۔ قونصل خانہ اور سفارت خانہ اس کی تلاش کے لیے کوششیں کر رہے ہیں۔ ہمیں اس معاملے کے حوالے سے تشویش ہے"۔

العتیبی نے برطانوی خبر رساں ایجنسی کی ٹیم کو استنبول کے شمال میں واقع قونصل خانے کی چھ منزلہ عمارت میں گھومنے کی اجازت دی۔ انہوں نے کہا کہ "اس وقت ترکی اور سعودی عرب میں متعلقہ حکام کے درمیان رابطے جاری ہیں.. ہم نتائج آنے تک انتظار کریں"۔

سعودی قونصل جنرل نے سعودی شہری پر قونصل خانے میں کسی بھی قسم کے قانونی الزامات عائد کیے جانے کی تردید کی۔ العتیبی نے صحافیوں کے ساتھ مل کر قونصل خانے کی پوری عمارت کا تفصیلی گشت کیا۔

سعودی قونصل جنرل کے مطابق سعودی شہری جمال خاشقجی کے "اغوا" کے متعلق باتیں ایک "بے بنیاد" امر ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ سفارتی مشن کے ہاتھوں سعودی شہری کے اغوا کا مفروضہ ایک مکروہ امر ہے۔

سعودی شہری خاشقجی کی گمشدگی کے حوالے سے تحقیقات میں ترک حکام کے ساتھ شریک ہونے کے لیے سعودی عرب کا ایک سکیورٹی وفد ہفتے کے روز استنبول پہنچا ہے۔