.

سوڈان: مظاہروں میں دہشت گردی کی منصوبہ بندی کرنے والا گروہ گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان میں حکام نے ہفتے کی صبح اعلان کیا ہے کہ دارالحکومت خرطوم کے علاقے دروشاب میں سکیورٹی فورسز نے جھڑپ کے بعد سوڈان لبریشن موومنٹ (عبد الواحد نور ونگ) کے ایک ذیلی تخریب کار گروہ پر قابو پا لیا۔ جھڑپ میں گروہ کا ایک رکن ہلاک ہو گیا جب کہ سکیورٹی فورسز کا ایک اہل کار زخمی ہوا۔

سوڈان کے وزیر مملکت برائے اطلاعات مامون حسن نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ سکیورٹی فورسز نے مذکورہ علاقے میں ایک گھر پر چھاپا مارا جہاں 10 افراد پر مشتمل یہ مسلح گروہ موجود تھا۔ اس گروہ کو مظاہرین کے درمیان گھس کر قتل کی کارروائیوں، تخریب کاری اور لوٹ مار کا مشن دیا گیا تھا۔

مامون حسن کے مطابق تخریب کار گروہ کا تعلق دارفور میں "عبدالواحد محمد نور" باغی تحریک سے ہے۔

سوڈانی وزیر نے الزام عائد کیا کہ یہ تحریک ملک میں انارکی اور شورش پھیلانا چاہتی ہے۔

وزیر مملکت مامون حسن نے بتایا کہ کارروائی میں ہتھیاروں کی بڑی تعداد، پاسپورٹس اور لیپ ٹاپس قبضے میں لے لیے گئے جن میں تخریبی کارروائیوں کے مکمل منصوبے محفوظ تھے۔ انہوں نے بتایا کہ قتل کی کارروائیوں کا مقصد احتجاجی مظاہروں کے دائرہ کار کو وسیع کرنا اور شہریوں کو مشتعل کرنا تھا۔

اس سے قبل جمعے کے روز سوڈانی سکیورٹی فورسز نے دارالحکومت خرطوم کے نزدیک 300 سے 400 افراد کے احتجاجی مظاہرے کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس اور صوتی بموں کا استعمال کیا۔ یہ افراد ام درمان کے علاقے میں نماز جمعہ کے بعد احتجاج کے لیے روانہ ہوئے۔

علاوہ ازیں بحر احمر کے ساحل پر واقع شہر پورٹ سوڈان اور ملک کے وسطی شہر الدندر سے بھی مظاہروں کی خبریں موصول ہوئیں۔

یاد رہے کہ سوڈان میں روٹی کی قیمت میں ہوشربا اضافے ، عام مہنگائی اور ابتر معاشی صورت حال کے خلاف 19 دسمبر سے جاری احتجاجی مظاہرے ملک کی 13 ریاستوں میں پھیل چکے ہیں۔

سکیورٹی حکام نے گزشتہ ہفتے کے روز ملک میں اپوزیشن کے دو اتحادوں میں سے ایک اتحاد کے 14 رہ نماؤں کو گرفتار کر لیا تھا۔ ان افراد کو تقریبا 9 گھنٹے بعد رہا کر دیا گیا۔