چینی کمپنی "ہواوے" پر امریکی الزامات میں ایران پر پابندیوں کی خلاف ورزی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی وزارت انصاف نے پیر کے روز چین کی مشہور ٹیلی کمیونی کیشن کمپنی "ہواوے" کے خلاف متعدد الزامات عائد کیے ہیں۔

امریکی وزارت نے ایران پر عائد بین الاقوامی پابندیوں کی خلاف ورزی کی بنیاد پر ہواوے گروپ کے بانی کی بیٹی اور کمپنی کی اعلی عہدے دار منگ وان چو اور کمپنی کے زیر انتظام تین دیگر ذیلی کمپنیوں کے خلاف 13 الزامات کا انکشاف کیا ہے۔ وان چو کو کینیڈا میں ضمانت پر رہا کر دیا گیا تھا۔

علاوہ ازیں امریکی وزارت انصاف نے ہواوے کی دو ذیلی کمپنیوں پر ٹکنالوجی چوری کرنے کے حوالے سے 10 الزامات عائد کیے ہیں۔

واضح رہے کہ کینیڈا میں امریکی وارنٹ کی بنیاد پر منگ وان چو کو حراست میں لیے جانے پر بیجنگ اور اوٹاوا کے درمیان تعلقات میں بڑے پیمانے پر کشیدگی پیدا ہو گئی۔

دوسری جانب امریکی ایف بی آئی کے ڈائریکٹر کرسٹوفر رے کا کہنا ہے کہ یہ تمام الزامات ہواوے کمپنی کے تمام تصرفات اور اقدامات کو بے نقاب کرتے ہیں جو اس نے امریکی کمپنیوں اور مالیاتی اداروں سے فائدہ اٹھانے اور کام کی آزاد اور منصفانہ عالمی منڈی کو خطرے میں ڈالنے کے واسطے کیے۔

امریکی جنرل پراسیکیوٹر کا کہنا ہے کہ الزامات کی فہرست میں دونوں معاملات کے حوالے سے چینی حکومت کا کوئی کردار شامل نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں