.

پینٹاگون : میکسیکو کے ساتھ سرحد پر دیوار کے لیے ایک ارب ڈالر کی اجازت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں پینٹاگون نے اعلان کیا ہے کہ قائم مقام وزیر دفاع پیٹرک شنہن نے میکسیکو کے ساتھ سرحد پر دیوار کی تعمیر کے سلسلے میں وزارت دفاع کے بجٹ سے ایک ارب ڈالر خرچ کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ مذکورہ سرحدی دیوار کی تعمیر کے لیے کوشاں ہیں۔

پیر کے روز جاری بیان میں امریکی وزارت دفاع نے بتایا کہ شنہن نے امریکی بری افواج کے انجینئرنگ بریگیڈ کے کمانڈر کو اس بات کی اجازت دے دی ہے کہ وہ داخلہ سکیورٹی کی وزارت کے واسطے ایک ارب ڈالر تک کی سپورٹ کی منصوبہ بندی اور اس پر عمل درامد کا آغاز کریں۔ داخلہ سکیورٹی کی وزارت نے پینٹاگون سے مطالبہ کیا تھا کہ میکسیکو کے ساتھ سرحد پر 92 کلو میٹر طویل اور 5.5 میٹر بلند باڑھ تعمیر کی جائے۔

پینٹاگون نے اس سلسلے میں شنہن کا بیان پیر کی شام تاخیر سے جاری کیا۔

کانگریس کی جانب سے مذکورہ سرحدی دیوار کی تعمیر کی فنڈنگ کی منظوری مسترد کر دی گئی تھی۔ اس کے بعد ٹرمپ نے 15 فروری کو سرحد پر "نیشنل ایمرجنسی" کا اعلان کر دیا۔ یہ ایک استثنائی اقدام تھا جس کے ذریعے وہ پارلیمنٹ کے ارکان سے تجاوز کرتے ہوئے اپنے منصوبے کے واسطے 8 ارب ڈالر سے زیادہ کی فنڈنگ حاصل کر سکتے ہیں۔

اس استثنائی اقدام نے کانگریس میں ٹرمپ کے حریف ڈیموکریٹس اور حلیف ریپبلکنز کے اندر غصے کی لہر دوڑا دی۔ ریپبلکنز کو اندیشہ ہے کہ ٹرمپ کا یہ قدم مستقبل میں کسی ڈیموکریٹ صدر کے لیے اس بات کی راہ ہموار کر سکتا ہے کہ وہ سیاسی مقاصد کی تکمیل کے لیے کانگریس کے ارادے سے بچنے کے واسطے اسی اقدام کا سہارا لیں۔