امریکی صدر نے عالمی فوجداری عدالت کو 'غیر قانونی' قرار دے دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ہیگ میں قائم عالمی فوجداری عدالت (آئی سی سی) کو 'غیر قانونی' قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس میں کسی امریکی، اسرائیلی یا دوسرے اتحادی کے ٹرائل کی کوشش کا فوری اور سخت ردعمل سامنے آئے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایک طرف امریکی صدر نے عالمی فوجداری عدالت کو غیر آئینی قرار دیا اور دوسری طرف افغانستان میں جنگی جرائم کی تحقیقات کی درخواست مسترد کرنے پر اس عدالت کے فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے۔ صدر ٹرمپ نے افغانستان میں جنگی جرائم سے متعلق درخواست کے استرداد کو امریکا کی 'فتح' قرار دیا ہے۔

ایک بیان میں امریکی صدر نے کہا کہ عالمی فوجداری عدالت نے افغانستان میں جنگی جرائم میں امریکی فوجیوں سے پوچھ گچھ کی درخواست مسترد کر کے افغانستان میں امریکی فتح ونصرت کا ثبوت پیش کیا ہے۔

امریکی صدر نے خبردار کیا کہ فلسطینیوں کی طرف سے کسی اسرائیلی یا امریکی کے خلاف اس عالمی عدالت میں درخواستوں پر کارروائی کے خطرناک نتائج سامنے آئیں گے۔

امریکی صدر نے کہا کہ آئی سی سی کا افغانستان میں جنگی جرائم کی تحقیقات سے انکار نہ صرف عالمی فتح ہے بلکہ یہ قانون کی بالادستی ہے۔ انھوں‌ نے دعویٰ کیا کہ امریکی فوج اور شہری اعلیٰ قانونی اور اخلاقی قدروں کی پابندی کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں