.

شاہِ بحرین کا دہشت گردی کےمقدمات میں سزایافتہ 551 افراد کی شہریت بحال کرنے کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحرین کے شاہ حمد بن عیسیٰ آل خلیفہ نے دہشت گردی کے مختلف مقدمات سزایافتہ 551 شہریوں کی قومیت کو بحال کرنے کا حکم دیا ہے۔بحرینی عدالتوں قید وجرمانے کی سزائیں سنانے کے علاوہ ان افراد کی شہریت بھی منسوخ کرنے کا حکم دیا تھا۔

بحرین نیوز ایجنسی ( بی این اے ) کے مطابق اتوار کو جار ی کردہ ’’ شامی حکم آئین کی دفعہ 24 اور قانون 58 مجریہ 2006ء کے عین مطابق ہے۔یہ قانون کمیونٹی کو دہشت گردی کی کارروائیوں سے تحفظ دینے سے متعلق ہے۔اس میں یہ تصریح کی گئی ہے کہ شہریت کی منسوخی سے متعلق عدالتی احکامات شاہِ بحرین کی منظوری تک مؤثر العمل نہیں ہوں گے‘‘۔

شاہ بحرین نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ عدالت کے حتمی فیصلے پر عمل درآمد سے قبل ان کیسوں کا از سرنو جائزہ لیں۔

بی این اے کے جاری کردہ بیان کے مطابق ’’دہشت گردی کے مقدمات میں مجرم قرار دیے گئے افراد کے معاملوں کا جائزہ جرائم کی سنگینی ، اثرات اور نتائج وعواقب پر مبنی ہونا چاہیے ۔اس کے علاوہ مجرموں سے قومی سلامتی کو درپیش ممکنہ خطرے کو بھی ملحوظ رکھا جانا چاہیے‘‘۔

شاہِ بحرین نے وزیر داخلہ سے بھی کہا ہے کہ وہ شہریت کی تنسیخ کے احکامات کا جائزہ لیں۔نیز شہریت کی بحالی کے حکم سے ممکنہ طور پر مستفید ہونے والوں کی ایک فہرست تیار کی جائے۔

واضح رہے کہ بحرین کی ایک عدالت نے گذشتہ ہفتے 138 افراد کو ایران کی سپاہِ پاسداران انقلاب کے ساتھ مل کر ایک دہشت گرد گروپ تشکیل دینے اور دہشت گردی کی کارروائیوں کی سازش کے الزامات میں قصور وار دے کر تین سال سے عمر قید تک جیل کی سزائیں سنائی تھیں اور ان سب کی شہریت منسوخ کرنے کا حکم دیا ہے۔ان سے قبل بھی گذشتہ برسوں کے دوران میں بحرین کی عدالتیں سیکڑوں افراد کی شہریت دہشت گردی کے مقدمات میں ماخوذ ہونے پر منسوخ کرنے کے احکامات جاری کرچکی ہیں۔