.

چین کے خلاف تجارتی جنگ میں ٹرمپ کی تازہ ترین جوابی ضرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جمعے کی شام ایک ٹویٹ میں اعلان کیا ہے کہ چین کی جانب سے سیاسی محرکات کی بنا پر امریکی برآمدات پر ٹیکس عائد کرنے کے جواب میں اب امریکا آنے والی چینی مصنوعات پر بھی 5% اضافی ٹیکس لاگو ہو گا۔

ٹرمپ کے مطابق یہ بات افسوس ناک ہے کہ امریکا کی سابقہ انتظامیاؤں نے اب تک چین کو منصفانہ اور متوازن تجارت سے بچ نکلنے کا موقع دیا ... اس امر نے امریکی ٹیکسوں پر بھاری بوجھ ڈال دیا ... ملک کے صدر ہونے کی حیثیت سے اب میں ایسا نہیں ہونے دے سکتا۔

ٹرمپ نے بتایا کہ امریکا یکم اکتوبر سے چین کی 250 ارب ڈالر کی مصنوعات پر موجودہ درآمدی ڈیوٹی 25 فی صد سے بڑھا کر 30 فی صد کر دے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بقیہ 300 ارب ڈالر کی مصنوعات جن پر یکم ستمبر سے 10 فی صد ٹیکس لاگو ہونا تھا ،،، اب وہ بڑھ کر 15 فی صد ہو جائے گا۔

امریکا ان ٹیکسوں کو بعض مصنوعات پر یکم ستمبر سے لاگو کرے گا تاہم ان میں تقریبا نصف کے قریب سامان پر ٹیکس کو 15 دسمبر تک ملتوی کر دیا گیا ہے۔