خود کش بمباروں کے خاندانوں کی کفالت کرنے والےلبنانی بنک پرامریکی پابندیاں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزارت خزانہ نے لبنان کے ایک بنک' جمال ٹرسٹ بنک' اور اس کے ماتحت متعدد کمپنیوں کو بلیک لسٹ کردیا ہے۔ اس بنک پر ایرانی حمایت یافتہ شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی معالی معاونت اور معاشی سہولت کاری کا الزام عاید کیا ہے۔

خیال رہے کہ واشنگٹن کافی عرصے سے لبنان کے ہر اس ادارے، تنظیم اور فرم پر پابندیاں عاید کررہا ہے جو دہشت گردوں کی معاونت میں ملوث پائے جاتے ہیں۔ جمال ٹرسٹ بنک پر حزب اللہ کی ایگزیکٹو کونسل کی مالی معاونت اور ایران میں قائم 'شہدا فائونڈیشن' کی مدد کا الزام عاید کیا جاتا ہے۔

امریکی وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ مذکورہ لبنانی بنک خود کش بمباروں کے اہل خانہ کی کفالت کررہا ہے۔

امریکی حکومت نے ایرانی پاسدارا انقلاب کے چار عہدیداروں پربھی پابندیاں عاید کی ہیں جن پر حزب اللہ کے ذریعے فلسطینی تنظیم اسلامی تحریک مزاحمت'حماس' کو فنڈز کی فراہمی کا الزام عاید کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ جمال ٹرسٹ کا شمار لبنان کے چھوٹے بنکوں میں ہوتا ہے۔ جمال ٹرسٹ بنک کے کل اثاثوں کی مالیت لبنانی بنکنگ سیکٹر کے اثاثوں کی نسبت صفر اعشاریہ 39 فی صد ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے لبنانی اقتصادی تجزیہ نگار پروفیسر جاسم عجاقہ نے کہا کہ جمال ٹرسٹ بنک پرامریکی پابندیوں کے لبنانی بنکنگ سیکٹر پر کسی قسم کے منفی اثرات نہیں پڑیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ بنک ڈیپازٹ کے علاوہ دیگر رقم دوسرے بنکوں میں منتقل کردے گا۔ تاہم اس سے یہ سوال پیدا ہوگا کہ آیا لبنان کے دوسرے بنک بھی دہشت گردوں کی مالی معاونت میں اسی طرح ملوث ہیں جس طرح جمال ٹرسٹ ملوث ہے۔

امریکی وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ حزب اللہ کی مالی مدد کرنے والے لبنانی بنک پر تنظیم کو ٹیکنالوجی میں معاونت اور ایران میں قائم شہداء فائونڈیشن کی مالی مدد بھی شامل ہے۔

امریکی وزارت خزانہ کے سیکرٹری برائے انسداد دہشت گردی سیگل منڈلکر کا کہنا ہے کہ جمال ٹرسٹ بنک جیسے لبنانی مالیاتی ادارے کرپٹ ہیں جو لبنان کی خود مختاری اور اس کے مالیاتی نظام کے لیے خطرہ ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں