.

داعش نے ’بلاثبوت‘ لندن چاقوحملے کی ذمے داری قبول کرلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے لندن کے جنوبی علاقے میں چاقو حملے کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے لیکن اس کا کوئی ثبوت فراہم نہیں کیا ہے۔

داعش کی خبررساں ایجنسی اعماق پر سوموار کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ’’لندن کے جنوبی علاقے اسٹریتھم میں گذشتہ روز حملہ کرنے والا (داعش کا) جنگجو ہے۔اس نے یہ حملہ اتحادی ممالک کے شہریوں کو نشانہ بنانے کی اپیل پر کیا تھا۔‘‘

برطانوی پولیس نے اتوار کی دوپہر اسٹریتھم میں چاقو گھونپنے کے واقعے کے فوری بعد اس مشتبہ نوجوان کو گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔اس نے خودکش حملے میں استعمال ہونے والی ایک جعلی جیکٹ پہن رکھی تھی۔

اس حملہ آور نے ماضی میں داعش کی تعریف کی تھی۔القاعدہ کا ایک میگزین آن لائن شیئر کیا تھا اور اپنی گرل فرینڈ کی حوصلہ افزائی کی تھی کہ وہ اپنے والدین کا سرقلم کردے۔

لندن میٹرو پولیٹن پولیس نے چاقوحملے کو دہشت گردی قراردیا تھا۔حملہ آور نے دو افراد پر چاقو کےوار کیے تھے۔ان میں ایک شخص کو گہرے زخم آئے تھے اور اس کی حالت تشویش ناک بتائی گئی تھی۔