.

لندن میں حملہ کرنے والے شدت پسند کی سودیش امان کے نام سے شناخت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جنوبی لندن میں راہ گیروں پر چاقو سے حملہ کرنے والے اور بعد میں پولیس کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے شخص کی شناخت سودیش امان کے نام سے کی گئی ہے۔ اسے حال ہی میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث ہونے کی وجہ سے تین سال چار ماہ کی نصف سزا مکمل ہونے کے بعد جیل سے رہا کیا گیا تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق پولیس کے مطابق جنوبی لندن میں لوگوں پر چاقو سے حملہ کرنے والے نوجوان کی شناخت 20 سالہ سودیش امان کے نام سے کی گئی ہے۔

نومبر 2018 میں سودیش امان پر دہشت گردوں سے متعلق معلومات پر مشتمل دستاویزات رکھنے اور دہشت گردوں کی اشاعت کو پھیلانے کے جرائم ثابت ہونے پر تین سال اور چار ماہ قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ نومبر میں 2018ء کو اس نے پولیس کو بیان دیتے ہوئے 13 جرائم کا اعتراف کیا تھا۔

ستریٹھم ہائی روڈ پر پیش آنے والے اس واقعے میں تین افراد زخمی ہوئے ہیں جن کی زندگی خطرے سے باہر بیان کی جاتی ہے۔

برطانیہ کے وزیراعظم بورس جانسن نے کہا ہے کہ حکومت پیر کے روز ’دہشت گردی کے جرائم میں سزا یافتہ افراد سے نمٹنے کے لیے نظام میں بنیادی تبدیلیوں‘ سے متعلق مزید منصوبوں کا اعلان کرے گی۔

اس سے قبل اپنے ٹویٹر پیغام میں بورس جانسن نے کہا کہ ان کا دل واقعے میں زخمی ہونے والوں کے ساتھ ہے۔ انھوں نے ہنگامی سروس فراہم کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کا شکریہ بھی ادا کیا۔

العربیہ کے نامہ نگار کے مطابق حملہ آور نے ایک بازار میں پہلے ایک خاتون پر چاقو سے وار کرکے اسے شدید زخمی کیا۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور ملزم کو پکڑنے کی کوشش کی۔