.

سعودی عرب :کرونا وائرس کے کیسوں کی شرح میں معمولی اضافہ، مزید 3989 افراد متاثر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں گذشتہ دو روز میں کرونا وائرس کے کیسوں کی شرح میں معمولی اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور اتوار کو وزارت صحت نے کووِڈ-19 کے 3989 نئے کیسوں کی تشخیص کی اطلاع دی ہے۔

وزارتِ صحت کے ترجمان نے بتایا ہے کہ گذشتہ 24 گھنٹے میں الہفوف شہر میں کووِڈ-19 کے سب سے زیادہ کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں۔ان کی تعداد 487 ہے۔ دارالحکومت الریاض میں 389 اور الدمام میں 320نئے کیسوں کی تشخیص ہوئی ہے۔باقی کیس سعودی عرب کے دوسرے شہروں اور صوبوں میں ریکارڈ کیے گئے ہیں۔

ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العالی نے نیوز بریفنگ میں بتایا کہ کرونا وائرس کا شکار چار افراد وفات پا گئے ہیں۔اب مملکت میں وفات پانے والے کل مریضوں کی تعداد 1551 ہوگئی ہے۔ انھوں نے آج کووِڈ-19 کے مزید 2627 مریضوں کے تن درست ہونے کی اطلاع دی ہے۔اس طرح اب صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 124755 ہوگئی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’’اگر ہم کرونا کے تشویش ناک کیسوں کی بات کریں تو ان کی تعداد دو سے ڈھائی ہزار کے درمیان ہے۔اگرچہ یہ کافی تعداد ہے لیکن بظاہر مستحکم ہے۔‘‘

ترجمان کا کہنا تھا کہ’’ہم جون میں اور بالخصوص وسط جون کے بعد کرونا وائرس کے متاثرین کی شرح دیکھیں تو یہ ایک اور ڈیڑھ کے درمیان ہے۔اس شرح کا تعلق ہمارے احتیاطی اقدامات یا ان کی عدم پاسداری سے ہے۔ ہم آپ کو یہ باور کرانا چاہتے ہیں کہ ماہرین انفیکشن کی شرح کو ایک فی صد تک رکھنے پر زوردے رہے ہیں تاکہ اس وائرس کے پھیلنے کی شرح بھی کم رہے۔حالیہ دنوں میں ہم نے کیسوں کی شرح میں معمولی اضافہ نوٹ کیا ہے۔اس کے پیش نظر ہمیں زیادہ محتاط ہونے کی ضرورت ہے۔‘‘

ڈاکٹر العبدالعالی نے شہریوں پر زوردیا ہے کہ وہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے حفاظتی احتیاطی تدابیر کی پاسداری کریں، سماجی فاصلہ اختیار کریں اور ہر وقت ماسک پہن کر رکھیں تاکہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے۔

انھوں نے وضاحت کی ہے کہ سعودی عرب میں زیادہ تر کیس پیشگی حفاظتی تدابیر کی پاسداری نہ کرنے کا نتیجہ ہیں۔لوگ سماجی میل ملاپ کے وقت احتیاطی تدابیر اختیار نہیں کررہے ہیں اور وہ اپنے ساتھ دوسروں کو بھی اس کا وَبائی وائرس کا شکار کررہے ہیں۔