.

سعودی عرب: شاہ عبدالعزیز شاہین میلے میں شریک پہلی خاتون 'باز پرور' سے ملیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں گذشتہ مہینے سے رواں 12 دسمبر تک جاری رہنے والے'شاہ عبدالعزیز شاہین' میلے میں بڑی تعداد میں مختلف اقسام اور نسلوں کے شاہینوں‌ کی خریدو فروخت کی گئی وہیں اس میلے میں شرکت کرنے والے پہلی خاتون باز پرور عذاری الخالدی کا بھی تعارف سامنے آیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ‌ نیٹ کے مطابق عذاری الخالدی نے میلے میں اپنا 'العنید' باز فروخت کے لیے پیش کیا۔

عذاری نے بتایا کہ اس نے اپنے شاہین کو دو ماہ تک ٹریننگ دی۔ اس نے شاہین کوسدھانے کے لیے اپنی پوری مہارت استعمال کی۔ ایک سوال کے جواب میں عذاری الخالدی نے بتایا کہ اس کی عمر 10 سال تھی جب اسے شاہین پالینے اور انہیں سدھانے کا شوق چرایا۔

اس نے بتایا کہ العنید لو 400 میٹر کے چکر پر پرواز کے لیے چھوڑا گیا جو اس نے 21 سیکنڈز اور 735 مائیکرو سیکنڈز میں مکمل کر لیا۔ عذاری الخالدی نے دوسرے الملوح مقابلے میں حصہ لیا۔ گذشتہ برس اس نے 'سطان' نامی اپنا شاہین فروخت کیا تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے اس نے بتایا کہ میں شاہین اور بازو کو سدھانے میں بہت خوشی محسوس کرتی ہوں اور یہ میرا پسندیدہ مشغلہ بن چکا ہے۔ میں 10 سال سے شاہین کو سدھا رہی ہوں۔ میں پہلا شاہین اپنے شوہر کے ساتھ مل کر سدھایا۔ گذشتہ برس میں نے 'تبع' نسل کے سطام نامی شاہین کو مقابلے میں پیش کیا مگر اسے میلے میں شرکت سے قبل تین ماہ تک سدھایا گیا۔