.

جنیوا میں امریکی صدر جوبائیڈن کی روسی ہم منصب پوتین سے پہلی ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے صدر جو بائیڈن نے جنیوا میں روسی ہم منصب ولادی میر پوتین سے بدھ کے روز پہلی ملاقات کی ہے اور ان سے دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تعلقات کے مختلف پہلووں کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔

صدرپوتین آج ہی امریکی صدر سے بات چیت کے لیے جنیوا پہنچے تھے۔انھوں نے اپنی آمد پرایک بیان میں اس امید کا اظہار کیا کہ ہماری ملاقات تعمیری رہے گی۔انھوں نے اس ملاقات کے لیے امریکی صدر کا شکریہ ادا کیا جبکہ صدر بائیڈن نے کہا کہ ’’بالمشافہہ ملاقات ہمیشہ بہتر رہتی ہے۔‘‘

اس سربراہ ملاقات سے قبل دونوں ممالک کے حکام نے کہا تھا کہ اس میں کسی نمایاں پیش رفت کا امکان نہیں۔البتہ اس سے دونوں ملکوں کے درمیان بہتر تعلقات استوار کرنے کی راہ ہموار ہوسکتی ہے۔

اس سربراہ ملاقات سے قبل سوئس صدر نے دونوں لیڈروں کا خیرمقدم کیا۔ملاقات میں صدر بائیڈن کے ساتھ امریکی وزیرخارجہ انٹونی بلینکن جبکہ روسی صدر پوتین کے ساتھ وزیرخارجہ سرگئی لاروف اور طرفین کی جانب سے ایک ایک مترجم شریک تھا۔

صدر بائیڈن اور ولادی میرپوتین سائبرکرائم سے روس کی امریکا کے انتخابات میں مبیّنہ مداخلت کے علاوہ تخفیف اسلحہ اور یوکرین میں روس کی مداخلت سمیت مختلف امورپر تبادلہ خیال کرنے والے تھے۔دونوں لیڈر قبل ازیں امریکا اور روس کے درمیان زیادہ مستحکم تعلقات بحال کرنے کی ضرورت پر زوردے چکے ہیں۔