.

یمنی فوج اورعرب اتحاد نے مآرب میں حوثیوں کے دو ڈرون،متعددبکتربند گاڑیاں تباہ کردیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی فوج نے مآرب میں جاری لڑائی کے دوران میں ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے دو ڈرون مارگرائے ہیں جبکہ عرب اتحاد نے حوثی ملیشیا کی متعدد بکتربند گاڑیاں تباہ کردی ہیں۔

مقامی ذرائع کے مطابق مآرب میں یمنی فوج اور حوثیوں کے درمیان جاری لڑائی میں اتوارکو شدت آگئی ہے۔العربیہ کے نمایندے نے بتایا ہے کہ یمنی فوج سے جھڑپوں میں حوثی ملیشیا کے لیڈرعبدالملک الحوثی کا ایک رشتہ دار عبدالراقب الحوثی مارا گیا ہے۔

حوثیوں نے اقوام متحدہ اور امریکا کی اپیلوں کے باوجود مآرب میں فوجی کارروائی جاری رکھی ہوئی ہے۔امریکا کے خصوصی ایلچی ٹِم لنڈرکنگ نے جون کے اوائل میں حوثیوں پر یمن میں قیام امن میں حائل ہونے کا الزام عاید کیا تھا۔

انھوں نے یمنی حکومت اور حوثیوں کے درمیان جنگ بندی کے لیے کوششوں کے ضمن میں سعودی عرب کا دورہ کیا تھا۔انھوں نے یمن میں سعودی سفیر سے ملاقات کی تھی اور ان سے یمن میں جنگ بندی سے متعلق الریاض سمجھوتے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا تھا۔

امریکی ایلچی نے حوثیوں کے مآرب میں شہریوں کے خلاف بڑھتے ہوئے حملوں اور امن عمل میں حائل ہونے کی مذمت کی تھی۔

حوثی ملیشیا مآرب پر قبضے کے لیے جارحانہ کارروائی کررہی ہے۔یمن کے شمال میں واقع یہ واحد شہر ہے جس پر صد عبدربہ منصورہادی کی حکومت کی عمل داری قائم ہے جبکہ ملک کے باقی شمالی صوبوں اور شہروں پر حوثی قابض ہیں۔