افغانستان وطالبان

اشرف غنی پیسوں کے بھرے بیگ فرار میں ساتھ لے گئے: روسی سفارت خانے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اتوار کو طالبان کےہاتھوں کے سقوط کے بعد کابل میں روسی سفارت خانے کے ایک ذریعے نے انکشاف کیا کہ افغان صدر اشرف غنی پیسوں سے بھری کاریں لے کر فرار ہوئے۔وہ اپنے ساتھ نہیں لے جا سکے وہ رن وے پر ہی پھینک دیا تھا۔

روسی سفارتی مشن کی پریس سکریٹری نکیتا ایشینکو نے افغان حکومت کے زوال کے بارے میں بات کی اور کہا کہ جو چیز سب سے زیادہ درست طریقے سے دکھائی گئی ہے وہ یہ ہے کہ غنی افغانستان سے کیسے فرار ہوئے؟ صدر غنی پیسوں سے بھری چار کاریں لے کر ہوائی ادے پر پہنچے۔

روسی "نووستی" نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ساتھ لائی گئی رقوم کا ایک حصہ ہیلی کاپٹر میں ڈال دیا گیا لیکن اس میں اتنی زیادہ گنجائش نہیں تھی۔ اسی لیے انہوں نے ہمراہ لائی گئی رقم سے بھرے تھیلے رن وے پر ہی چھوڑ دیے تھے۔

ہیلی کاپٹر کے ذریعے فرار

سابق نائب صدر عبداللہ عبداللہ نے اتوار کو فیس بک پر پوسٹ کیے گئے ایک ویڈیو کلپ میں تصدیق کی تھی کہ افغان صدر اشرف غنی افغانستان چھوڑ چکے ہیں۔ یہ ویڈیو اس وقت سامنے آئی تھی جب طالبان نے دارالحکومت کابل کے بعض حصوں کی جانب پیش قدمی شروع کی۔

سی این این نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ صدر غنی ہیلی کاپٹر کے ذریعے کابل میں صدارتی محل سے روانہ ہوئے۔

افغان وزارتِ داخلہ کے ایک سینئر عہدیدار نے بتایا کہ صدر کی روانگی کے بارے میں معلومات درست ہیں۔ دوسری طرف سبکدوش افغان صدر نے زور دیا کہ سکیورٹی وجوہات کی بنا پر ان کی نقل وحرکت ظاہر نہیں کی جا سکتی۔

مقبول خبریں اہم خبریں