.

بغیر ویکسن سکول آنے والے سعودی طلبہ کو پہلے دو ہفتے غیر حاضر شمار نہیں کیا جائے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’ایس پی اے‘‘ نے مملکت کی وزارت تعلیم کے حوالے سے بتایا ہے کہ یونیورسٹی اور 12 سال کی عمر سے زائد سکول جانے والے ان طلبہ وطالبات جنہوں نے ابھی تک ویکسین کی خوراک نہیں لگوائی انہیں سکول کھلنے کے پہلے دو ہفتوں کے دوران غیر حاضر تصور نہیں کیا جائے گا۔

کرونا سے بچاؤ کے لیے گذشتہ ہفتے وزارت تعلیم نے مملکت کے اگلے تعلیمی سال کے دوران طلبہ وطالبات آٹھ واضح کے لیے ہدایات جاری کی تھیں۔ وزارت تعلیم نے ٹوئٹر کے اپنے اکاؤنٹ پر بیان میں کہا کہ سکولوں میں محفوظ واپسی کے لیے آٹھ امور کی پابندی ناگزیر ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ طلبہ کے لیےکورونا ویکسین کی دونوں خوراکیں ضروری ہیں۔ سکول میں موجودگی کے دوران ماسک کی مسلسل پابندی، مصافحے سے پرہیز اور سماجی فاصلے کی پابندی کی جائے۔
وزارت تعلیم کا کہنا ہے کہ چھینکتے وقت رومال کا استعمال کریں یا جھک کر چھینکیں۔

سکول لنچ کلاس روم میں کیا جائے ۔سکول میں زیر استعمال اشیا کی مستقل صفائی، عمومی صفائی کی پابندی کی جائے جبکہ ہاتھ کو بار بار سینیٹائز کرتے رہنا چاہیے۔ وزارت تعلیم کاکہنا ہے کہ نئے تعلیمی سال کے آغاز پر طلبہ کے ساتھ تدریسی عملے کو بھی ایس او پیز کا پابند بنایا گیا ہے۔

یاد رہے کہ قبل اس سے ہدایت تھی کہ مڈل اور ثانوی سکولوں کے 12 برس اور اس سے زیادہ عمر کے بچوں اور بچیوں کو سکولوں میں تعلیم حاصل کرنے کی اجازت اس صورت میں ہو گی جبکہ وہ ویکسین کی دونوں خوراکیں لے چکے ہوں۔‘ ’نرسری اور پرائمری سکول کے طلبہ کے لیے سکول کھلنے کی تاریخ 30 اکتوبر 2021 مقرر کی گئی ہے۔