.

طالبان غلط بیانی کرتے ہیں ، ان کی حکومت تسلیم نہیں کریں گے : فرانس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس نے افغان طالبان تحریک پر جھوٹ بولنے اور اپنے وعدوں سے مکر جانے کا الزام عائد کیا ہے۔ فرانس کے وزیر خارجہ جان ایف لودریاں نے غصیلے لہجے میں کہا ہے کہ ان کا ملک طالبان کی حالیہ اعلان کردہ حکومت کے ساتھ کوئی تعلق قائم نہیں کرے گا بالخصوص جب کہ یہ حکومت ایک ہی رنگ کی حامل ہے۔

فرانسیسی وزیر خارجہ کا یہ بیان ہفتے کی شب دوحہ روانگی سے قبل سامنے آیا۔ وہ آج اتوار کے روز قطر میں افغانستان سے افراد کے انخلا کی آئندہ کارروائیوں کے حوالے سے بات چیت کریں گے۔

لودریاں نے فرانس 5 ٹیلی وژن سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ " انہوں (طالبان) نے کہا تھا کہ وہ بعض غیر ملکیوں اور افغانوں کو آزادی کے ساتھ جانے کی اجازت دیں گے ، انہوں نے تمام گروہوں کی نمائندگی کرنے والی ایک جامع حکومت کی بات کی تھی ،،، مگر وہ جھوٹ بولتے ہیں" ... افغانستان میں اب بھی فرانسیسیوں کی قلیل تعداد اور فرانس سے روابط رکھنے والے سیکڑوں افغان موجود ہیں "۔

فرانسیسی وزیر خارجہ نے بین الاقوامی اقتصادی دباؤ کا بھی عندیہ دیا جو طالبان تحریک پر وار ثابت ہو سکتا ہے۔

یاد رہے کہ فرانس نے افغانستان سے تین ہزار افراد کو نکالنے کا عمل ملتوی کر کے طالبان کے ساتھ بات چیت کی تا کہ مزید افراد کو کوچ کرانے میں کامیابی ہو سکے۔

طالبان تحریک نے ملک س بارہ جانے کے لیے کوشاں ہزاروں افغانوں سے گذشتہ ہفتے اپیل کی تھی کہ وہ ملک چھوڑ کر نہ جائیں۔ بالخصوص پیشہ ورانہ صلاحیتوں کے مالک افراد کیوں کہ افغانستان کو ان کی ضرورت ہے۔