.

امریکی ایوان نمائندگان نے اسرائیل کے آئرن ڈوم کےلیے1ارب ڈالرکی منظوری دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ایوان نمائندگان نے جمعرات کو بھاری اکثریت سے اسرائیل کو اس کے آئرن ڈوم میزائل ڈیفنس سسٹم کو جدید بنانے کے لیے ایک ارب ڈالر فراہم کیے جانے سے متعلق متنازع بل کےحق میں ووٹ دیا ہے۔ دو دن قبل ہی کانگریس میں اسرائیل کے متنازع آئرن ڈون کی فنڈنگ کے حوالے سے اعتراضات اٹھائے گئے تھے اور اس کے وسیع تر اخراجات منصوبے کو زیربحث لایا گیا تھا۔

جمعرات کے روز ایوان نمائندگان میں ہونے والی رائے شماری میں بل کے حق میں 420 اورمخالفت میں 9 ووٹ ڈالے گئے۔ مخالفت میں 8 ڈیموکریٹس اور 1 ریپبلکن نے ووٹ ڈالا۔ اس موقعے پر2 ارکان غیر حاضر رہے۔ اس وسیع منظوری کے بعد بل سینیٹ کو بھیج دیا گیا تاہم سینیٹ میں اس پر رائےشماری کی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا۔

چند زیادہ لبرل ڈیموکریٹس نےبل کی ایک شق کو ویٹو کر دیا ہے اور کہا ہے کہ اگروہ شق بل میں شامل کی گئی تو وہ وسیع تر اخراجات کے بل کے خلاف ووٹ دیں گے۔ چونکہ ایوان نمائندگان میں ڈیموکریٹس کو معمولی برتری حاصل ہے، اس لیے بل کی منظوری کو خطرہ لاحق ہو گیا تھا، کیونکہ ریپبلکن وفاقی حکومت کو تیسرے دسمبر تک فنڈ دینے اور ملک کی قرضے کی حد بڑھانے کے منصوبے کی مخالفت کرتے ہیں۔

وسیع تراخراجات منصوبے پر قانون سازی کو ہٹانے سے کانگریس میں اسرائیل کے لیے مضبوط دو طرفہ حمایت کی طویل روایت کے باوجود ریپبلیکنز نے ڈیموکریٹس کو اسرائیل مخالف قرار دینے کی کوشش کی حالانکہ امریکا کی دونوں بڑی جماعتیں ہرسال اسرائیل کو اربوں ڈالر کی امداد فراہم کری ہیں۔

اسرائیل نے فوری جواب دیا۔ وزیر اعظم نفتالی بینیٹ نے ایک بیان میں کہا کہ امریکی ایوان نمائندگان ، ڈیموکریٹس اور ریپبلیکنز کے تمام اراکین کا شکریہ ، ان کی اسرائیل کے لیے زبردست حمایت اور اسرائیل کی سلامتی کے لیے ان کے عزم کے لیے پرہم ان کے شکر گذار ہیں۔ اس بل کی منظوری سے اس کی حمایت پر سوال اٹھانے والوں کو زبردست جواب ملا ہے۔

کچھ لبرل ڈیموکریٹس نے حال ہی میں امریکا اسرائیل پالیسی پر تحفظات کا حوالہ دیتے ہوئے خدشات کا اظہارکیا تھا۔

انسانی حقوق سے متعلق اداروں کے دباؤ پر کانگریس کے بعض اراکین نے اسرائیل کو آئرن ڈوم کی مدد میں دی جانے والی رقوم پر تحفظات کا اظہار کیا تھا۔ انسانی حقوق کے اداروں کا کہنا تھا کہ اسرائیل نے رواں سال مئی میں فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی پربدترین بمباری کی تھی جس کے نتیجے میں عام شہریوں کی اموات ہوئی تھیں۔ دوسری طرف اسرائیل کا کہناہے کہ اس نے غزہ کی پٹی سےداغے 4350 راکٹوں کو فضامیں تباہ کردیا تھا۔

فنڈنگ کی مخالف ڈیموکریٹس ارکان میں رشیدہ طلیب نے گفتگو کے دوران کہا کہ ہمیں فلسطینیوں کو اسرائیلی حملوں سے محفوظ رکھنے کی ضرورت کے بارے میں بھی بات کرنی ہے۔

ایوان نمائندگان میں بدھ کو پیش کیا گیا بل ان انٹرسیپٹرز کو تبدیل کرنے کے لیے ایک ارب ڈالر فراہم کرتا ہے جو اس دوران استعمال کیے گئے تھے۔