روس اور یوکرین

روس کیف پرچڑھائی کے لیے تیار، بیلاروس سے رسد وصول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اتوار کی رات یوکرین کی فوج نے اعلان کیا کہ اس نے خارکیف شہر کے چوگوو نامی قصبے کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔

یوکرین کے میدان جنگ میں گذشتہ چند گھنٹوں میں تیزی سے پیشرفت دیکھنے میں آئی، خاص طور پر روسی افواج نے کیف پر حملہ کرنے کے لیے وسائل اکٹھا کرنا شروع کر دیے ہیں۔ یوکرین کے جنرل اسٹاف کے مطابق بیلا روس کی طرف سے بھی چرنوبل کے راستے روسی فورسز کو رسد پہنچائی گی ہے۔

یوکرین کے ایک اہلکار نے تصدیق کی کہ شدید روسی بمباری نے ملک کے وسطی، شمالی اور جنوبی شہروں کو نشانہ بنایا۔

اتوار کی رات یوکرین نے اطلاع دی کہ مشرقی یوکرین کے خارکیف میں ایک ٹیلی ویژن ٹاور کو نشانہ بنائے جانے کے بعد ریڈیو اور ٹیلی ویژن کی نشریات بند ہو گئیں۔ ایک ویڈیو کلپ میں مذکورہ ٹاور پر روسی بمباری کو ریکارڈ کیا گیا ہے۔

روسی بمباری میں علاقائی استغاثہ کے دفتر اور شہر میں آذربائیجانی سفارت خانے کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

یوکرین کے دارالحکومت کیف کے مضافات میں واقع شہر ایربن میں روسی اور یوکرین کی افواج کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہوئیں جس کے بعد روس کی گولہ باری روک دی گئی۔

مغربی یوکرین میں لیویو کے میئر نے بھی خبردار کیا کہ روسی صدر ان کے ملک جو کہ یورپ کے ایک بڑے حصے کی نمائندگی کرتا ہے لیویو شہر میں حکومتی اداروں اور سفارتی ہیڈکوارٹر کو نشانہ بنا رہا ہے اور وہ شہرکا کنٹرول حاصل کرنے کی کوشش کررہا ہے۔

یوکرین کی قومی سلامتی اور دفاعی کونسل کے سیکرٹری جنرل اولیکسی داینیلوف نے کہا کہ روس یوکرین کے شہر دنیپرو کا محاصرہ کرنے کے لیے اپنی فوجی قوتوں کو متحرک کر رہا ہے۔

دانیولوف نے واضح کیا کہ روس یوکرین کو بحیرہ اسود سے الگ تھلگ کرنے پر توجہ دے رہا ہے۔

یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے ایک بار پھر اتحادیوں پر تنقید کرتے ہوئے روسی صدر ولادیمیر پوتین پر یوکرین کے شہروں میں پہلے سے سوچے سمجھے قتل کی منصوبہ بندی کرنے کا الزام لگایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں