سعودی عرب میں تیل تنصیبات پرحوثیوں کے حملوں پر دنیا کوتشویش ہونی چاہیے:سربراہ آرامکو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

دنیا کی تیل کی سب سے بڑی کمپنی سعودی آرامکو کے سربراہ امین الناصر نے کہا ہے کہ یمن سے ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کے مملکت میں تیل کی تنصیبات کے خلاف بڑھتے ہوئے حملوں پردنیا کو تشویش ہونی چاہیے۔

انھوں نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ حملے ایسے وقت میں کیے جارہے ہیں جب تیل کی عالمی مارکیٹ سخت دباؤ کا شکار ہے۔دنیا کو ان حملوں پرحقیقی تشویش لاحق ہونی چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ اگر وقت کے ساتھ ساتھ حوثی ملیشیا کے حملوں میں مزید اضافہ ہوتا ہے تو اس کے تیل کی ترسیل پر اثرات مرتب ہوسکتے ہیں۔

وہ سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی (ایس پی اے) کی جانب سے سامنے آنے والے ایک بیان کا حوالہ دے رہے تھے۔اس میں کہا گیا تھا کہ حوثیوں کے حملوں کے نتیجے میں اگرعالمی مارکیٹ میں تیل کی رسد میں کوئی کمی واقع ہوتی ہے تو سعودی عرب اس کا ذمہ دار نہیں ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں