ہتک عزت کیس: ہولی ووڈ اداکارہ امبر ہرڈ پر ڈیڑھ کروڑ جرمانہ عائد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ میں بدھ کے روز ایک عدالتی جیوری نے اداکار جانی ڈیپ کے حق میں فیصلہ سناتے ہوئے قرار دیا ہے کہ اداکارہ ایمبر ہرڈ کے ان کے خلاف جسمانی و جنسی تشدد کے دعوے بے بنیاد تھے اور یہ کہ وہ جانی ڈیپ کی ہتکِ عزت کا موجب بنی ہیں۔

جیوری نے ایمبر ہرڈ کے حق میں بھی فیصلہ دیا جن کا کہنا تھا کہ جانی ڈیپ کے وکیل ان کی ہتکِ عزت کا موجب بنے تھے۔

سماعت کے بعد ایمبر ہرڈ عدالت سے باہر آ رہی ہیں: رائیٹرز
سماعت کے بعد ایمبر ہرڈ عدالت سے باہر آ رہی ہیں: رائیٹرز

جیوری نے جانی ڈیپ کے حق میں فیصلہ دیتے ہوئے ایمبر ہرڈ سے کہا کہ وہ ڈیڑھ کروڑ ڈالر ہرجانہ ادا کریں ۔ جب کہ جانی ڈیپ کی جانب سے ایمبر ہرڈ کو بیس لاکھ ڈالر ادا کرنے کا فیصلہ دیا گیا ہے۔

اس فیصلے سے جانی ڈیپ اور ایمبر ہرڈ کے مابین جاری قانونی جنگ کا اختتام ہوگیا جس کے دوران دونوں اطراف سے ایک دوسرے پر تشدد کے الزامات لگائے گئے تھے۔

جانی ڈیپ مقدمہ جیتنے کے بعد: رائیٹرز
جانی ڈیپ مقدمہ جیتنے کے بعد: رائیٹرز

جانی ڈیپ نے ایمبر ہرڈ پر پانچ کروڑ ڈالر ہرجانے کا دعویٰ دائر کر رکھا تھا۔ ان کا دعویٰ تھا کہ 2018 میں ایمبر ہرڈ کی جانب سے واشنگٹن پوسٹ میں شائع ہونے والا ایک مضمون ان کے لیے ہتکِ عزت کا باعث بنا تھا۔ اس مضمون میں انہوں نے خود کو گھریلو تشدد کا شکار قرار دیا تھا۔ اگرچہ انہوں نے اس مضمون میں جانی ڈیپ کا نام نہیں لیا تھا لیکن جانی ڈیپ نے ان الفاظ کو اپنے لیے ہتک عزت کا موجب قرار دیا۔

ایمبر ہیرڈؒ رائیٹرز
ایمبر ہیرڈؒ رائیٹرز

ایمبر ہرڈ نے جانی ڈیپ کے خلاف دس کروڑ ڈالر کا ہتکِ عزت کا دعوی دائر کر رکھا تھا۔ ایمبر ہرڈ کا کہنا ہے کہ جانی ڈیپ کے وکیل، ان کے جسمانی اور جنسی تشدد کے الزامات کو جھوٹا قرار دے کر ایمبر ہرڈ کی ہتکِ عزت کا موجب بنے تھے۔

مقدمے کی سماعت چھ ہفتے تک جاری رہی جس کے دوران دونوں طرف سے گواہوں کے بیانات آئے اور ان پر جرح کی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں