.
حج وعمرہ

حج 2022: الامارات ائیرلائن مدینہ منورہ کے لیے پروازوں کی تعداد دُگنا کرے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کی فضائی کمپنی الامارات ایئرلائن نے سعودی عرب میں عازمین حج کی بڑی تعدادکو پہنچانے کے لیے جدہ اور مدینہ منورہ کے لیے اپنی روزانہ پروازوں کی تعداد میں اضافے کا اعلان کیا ہے۔

دبئی میں قائم فضائی کمپنی جدہ کے لیے 31 اضافی پروازیں چلائے گی اور 23 جون سے 20 جولائی تک مدینہ منورہ کے لیے روزانہ پروازوں کی تعداد کو دُگنا کرے گی۔

کمپنی نے یہ فیصلہ اس سال مملکت کی جانب سے عازمین حج کی تعداد دس لاکھ تک بڑھانے کے اعلان کے بعد کیا ہے اور وہ یواے ای کے علاوہ دوسرے ممالک سے بھی عازمین حج کو حجاز مقدس میں پہنچا رہی ہے۔

اطلاعات کے مطابق الامارات سے انڈونیشیا، پاکستان، بھارت، بنگلہ دیش، نائجیریا، ترکی، مصر، ایتھوپیا، ملائیشیا، برطانیہ، امریکا، متحدہ عرب امارات اور الجزائر کی جانب سے عازمین حج کو لے جانے کے لیے خصوصی پروازیں چلانے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

الامارات نے ایک بیان میں کہا کہ عازمین کی مدد کے لیے خصوصی ’حج ٹیم‘ کا انتظام کیا جائے گا۔اس میں ایک وقف چیک ان اور ٹرانسفر کاؤنٹر، وضو کی سہولت، بغیرخوشبو تولیے مہیا کرنا اور احرام پہننے کو آسان بنانے کا عمل شامل ہیں۔

بیان میں واضح کیا گیا ہے کہ پرواز کے دوران سفر تفریحی نظام میں ایک حج ویڈیو بھی پیش کی جائے گی۔اس میں قرآن پاک کے چینل کے علاوہ حفاظت، مناسک حج کی ادائی کے بارے میں معلومات کا احاطہ کیا گیا ہے۔نیزحجاج کرام واپسی پر اپنے ساتھ پانچ لیٹر تک مقدس پانی زمزم ساتھ لے جاسکتے ہیں۔

قبل ازیں منگل کے روز سعودی حکام نے بتایا تھا کہ اس سال حج سے قبل اب تک دنیا بھر سے مدینہ منورہ میں ایک لاکھ 72 ہزار 562 عازمین پہنچ چکے ہیں۔

سعودی وزارت حج وعمرہ کے مطابق حج پروازوں کے آغازکے بعد سے اب تک 156,828 عازمین کی مدینہ منورہ کے شہزادہ محمد بن عبدالعزیز بین الاقوامی ہوائی اڈے پرآمد ہوچکی ہےجبکہ لینڈ امیگریشن سینٹر نے 13,097 عازمین حج کا خیرمقدم کیا ہے۔ وہ زمینی سرحدی گزرگاہوں کے ذریعے شہرنبی ﷺ پہنچے تھے۔

مدینہ میں قیام پذیرعازمین کی قومیتوں کے اعدادوشمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ انڈونیشیا کے عازمین کی تعداد سب سے زیادہ (24,478) ہے۔اس کے بعد بھارت، بنگلہ دیش، عراق اور ایران سے تعلق رکھنے والے عازمین کی مدینہ منورہ میں پہنچ چکے ہیں۔

گذشتہ چند روزکے دوران میں 76,955 عازمین مدینہ منورہ سے مکہ مکرمہ کے مقدس مقامات کی طرف روانہ ہوئے تھے۔رواں ماہ کے اوائل میں سعودی عرب نے کرونا وائرس کی وبا کے بعد غیرملکی عازمین حج کے پہلے دستے کا خیرمقدم کیا تھا۔یہ مسلم اکثریتی ملک انڈونیشیا سے تعلق رکھنے والے عازمین حج تھے۔

اس کے بعد پاکستان سمیت دوسرے اسلامی ممالک سے بھی عازمین کی مدینہ منورہ میں آمد کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔پاکستانی عازمین تو مدینہ منورہ میں آٹھ روزہ قیام کے بعد مکہ مکرمہ کی جانب جارہے ہیں جبکہ دوسرے ممالک کے عازمین اپنے اپنے طے شدہ شیڈول کے مطابق مکہ مکرمہ روانہ ہورہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں