نیٹوکی سویڈن اور فن لینڈ کو اتحاد میں شامل ہونے کی دعوت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

معاہدہ شمالی اوقیانوس کی تنظیم نیٹو نے سویڈن اور فن لینڈ کو فوجی اتحاد کا رکن بننے کی دعوت دی ہے۔

بدھ کے روز اسپین کے شہر میڈرڈ میں نیٹو سربراہ اجلاس کے جاری کردہ اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ فن لینڈ اور سویڈن کے الحاق سے وہ (اتحادی) محفوظ، نیٹو مضبوط اور یورو اٹلانٹک کا علاقہ مزید محفوظ ہو جائے گا۔انھوں نے کہا کہ اتحاد نے ایک نئے تزویراتی تصور پر بھی اتفاق کیا ہے۔

فن لینڈ اور سویڈن کی نیٹو میں شمولیت کی آخری رکاوٹ منگل کے روز دور ہوگئی تھی اور ترکی نے ان کی رُکنیت کی حمایت پر رضامند کا اظہار کیا تھا۔اس نے دونوں نارڈک ممالک کے ساتھ مذاکرات کے بعد کہا تھا کہ اسے’’وہ مل گیا ہے جو وہ چاہتا تھا‘‘۔

فن لینڈ کے صدر ساؤلی نینیسٹو نے منگل کے روز کہا کہ ترکی نے یہ فیصلہ صدر رجب طیب ایردوآن کی ان کے اور سویڈش وزیراعظم میگڈالینا اینڈرسن کے ساتھ ملاقات کے بعد کیا ہے۔نیٹو کے سیکرٹری جنرل جینزاسٹولٹن برگ نے اس ملاقات کے لیے سہولت کار کا کردار ادا کیا ہے۔

نینیسٹو نے ایک بیان میں کہا کہ اس ملاقات کے نتیجے میں ہمارے وزرائے خارجہ نے سہ فریقی یادداشت پر دست خط کیے ہیں جس سے اس بات کی تصدیق ہوتی ہے کہ ترکی میڈرڈ سربراہ اجلاس میں فن لینڈ اور سویڈن کو نیٹو کا رکن بننے کی دعوت کی حمایت کرے گا۔

انھوں نے مزید کہا کہ نیٹو میں ہماری شمولیت کے ٹھوس اقدامات پر تنظیم کے رکن ممالک کی جانب سے اگلے دو روز کے دوران میں اتفاق کیا جائے گا۔

ان کے بہ قول طے پانے والی مفاہمت کی یادداشت تینوں ممالک کے اس عزم کی نشان دہی کرتی ہے کہ وہ ’’ایک دوسرے کی سلامتی کولاحق خطرات کے خلاف اپنی مکمل حمایت کریں گے‘‘۔

سویڈن اورفن لینڈ نیٹو کی رکنیت کے ذریعے اپنی سلامتی بڑھانے کے خواہاں ہیں۔یوکرین پر روس کے حملے کے تناظرمیں ان کی رکنیت کی درخواست نے فوجی اتحاد میں گذشتہ کئی دہائیوں سے کسی نئے ملک کی شمولیت کی روایت کا بھی خاتمہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں