سعودی عرب:فضائی اڈوں،برّی اوربحری پورٹس پر ڈیوٹی فری زونزمیں توسیع کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی کابینہ نے فضائی اڈوں، سمندری اور زمینی بندرگاہوں پر ڈیوٹی فری زونزمیں توسیع کی منظوری دے دی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) نے منگل کے روز اطلاع دی ہے کہ الریاض میں کابینہ کا اجلاس شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے زیرصدارت منعقد ہوا۔کابینہ نے مستقبل میں ضرورت کے مطابق فضائی، سمندری اور زمینی بندرگاہوں پر ڈیوٹی فری دکانوں کے قیام کی منظوری دی ہے۔سعودی عرب میں آنے اوریہاں سے جانے والے مسافروں کو ان ڈیوٹی فری دکانوں تک رسائی حاصل ہوگی۔

یہ فیصلہ زکوٰۃ، ٹیکس اور کسٹم اتھارٹی (زیڈ اے ٹی سی اے) کی جانب سے گذشتہ سال ڈیوٹی فری علاقوں کا نظم ونسق چلانے کے لیے قواعدوضوابط میں ترمیم کی تجویز کے بعد کیا گیا ہے۔

اتھارٹی نے اس وقت اپنی تجویزمیں کہا تھا کہ ’’ڈیوٹی فری علاقے صرف مملکت کے بین الاقوامی ہوائی اڈوں پرروانگی ہالوں تک محدودہیں۔اس کے نتیجے میں مملکت میں ڈیوٹی فری علاقوں کی توسیع اورترقی پر پابندی عاید ہے‘‘۔اس نے یہ پابندی ختم کرنے کے لیے ترمیم تجویز کی تھی۔

کابینہ نے گذشتہ ہفتے بین الاقوامی دہشت گردی کے خطرات کے بارے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے آریا فارمولا اجلاس کے دوران میں سعودی عرب کے مؤقف کا بھی اعادہ کیا اور کہا کہ ’’سرحدپار دہشت گردی کے خطرات کی بیخ کنی کے لیے عالمی برادری کے فوری اور جامع ردعمل کی ضرورت ہے کیونکہ دہشت گرد عام شہریوں، اہم سرکاری اور شہری تنصیبات، توانائی کی ترسیل اور عالمی اقتصادی استحکام کو نشانہ بناتے ہیں‘‘۔

اجلاس میں کابینہ نے عراق کی سلامتی اوراستحکام کے لیے مملکت کی حمایت کابھی اعادہ کیا۔

گذشتہ ہفتے عراق کے شیعہ عالم دین مقتدیٰ الصدر اورحریف گروپوں کے حامیوں کے درمیان جھڑپوں نے بغداد کے انتہائی سکیورٹی والے گرین زون کو میدان جنگ میں تبدیل کر دیا تھا اور ان جھڑپوں میں تیس سے زیادہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

سعودی وزراء کابینہ کے اجلاس میں شریک ہیں۔
سعودی وزراء کابینہ کے اجلاس میں شریک ہیں۔
مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں