یوکرینی صدر کا ولی عہد محمد بن سلمان کے تشکر پر مبنی ٹویٹ

اقوام متحدہ میں یوکرینی حمایت میں قرارداد کے حق میں ووٹ دینے کی تعریف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یوکرینی صدر ولادی میر زیلنسکی نے اپنے ٹویٹ میں سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی طرف سے اقوم متحدہ میں یوکرین کی خود مختاری و سلامتی کے حق میں ووٹ دینے اور روس کی طرف سے کرائے گئے ریفرنڈم کی مخالفت پر شکریہ ادا کیا ہے۔

اپنے ٹویٹ میں صدر زیلنسکی نے کہا 'میری شہزادہ محمد بن سلمان ولی عہد سعودی عرب سے بات ہوئی ہے، میں نے ان کا شکریہ ادا کیا ہے کہ ان کی طرف سے یوکرین کی علاقائی سالمیت کی حمایت میں یو این قرار داد کی تائید کی گئی۔

بدھ کے روز جنرل اسمبلی کے اجلاس کے دوران سعودی عرب سمیت 142 رکن ممالک نے یوکرین کی سلامتی و خود مختاری کے حق میں پیش کردہ قرار داد کے لیے ووٹ دیا۔

یہ قرارداد روس کی طرف سے یوکرین کے چار مختلف علاقوں میں ریفرنڈم کراکے انہیں اپنے ساتھ ملانے کا اعلان کے خلاف تھی۔ اس بارے میں سعودی عرب اقوام متحدہ میں نمائندے عبدالعزیز الواصل نے یوکرین کے حق میں ووٹ دینا اس امر کا اظہار ہے کہ سعودی عرب اقوم متحدہ کے چارٹر کے مطابق ہر ملک کی سلامتی و خود مختاری کی حمایت کرتا ہے۔'

یوکرین صدر زیلنسکی نے اپنے ٹویٹ میں یہ بھی کہا ہے۔ ولی عہد سے بات چیت میں جنگی قیدیوں کی رہائی کے معاملے پر بھی بات چیت ہوئی دونوں ملک روسی قید میں یوکرینی قیدیوں کی رہائی کے لی کام کریں گے۔

خیال رہے سعودی ولی عہد اس سے پہلے بھی دو امریکی قیدیوں سمیت روس سے 10 جنگی قیدیوں کی رہائی کرا چکے ہیں۔

یوکرینی لیڈر نے اپنے ٹویٹ میں کہا ہے کہ ان کی سعودی ولی عہد کے ساتھ سعودی عرب کی طرف سے یوکرین کے لیے مالی امداد پر بھی بات کی گئی ہے۔ ان کے مطابق 'یہ امداد میکرو فنانشل کی صورت میں ہو گی۔'

دوسری جان سعودی ولی عہد نے یوکرین کے لیے 400 ملین ڈالر کی امداد کا یوکرین کے لیے اعلان کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں