شہزادہ خالد الفیصل کا گانے ’’ لن اسلاکم‘‘ کے سْروں سے محظوظ ہونے کی ویڈیو وائرل

جدہ میں پرنس عبداللہ الفیصل انعام برائے عربی شاعری میں "ولاء الجندی" کے گانا گایا، شہزادہ خالد تالیاں بجاتے رہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شہزادہ خالد الفیصل نے گانے ’’ لن اسلاکم‘‘ کو سنتے ہوئے والہانہ انداز میں تالیاں بجاتے اور سْروں سے لطف اندوز ہوکر دیکھنے والوں کو حیران کردیا۔ گلوکارہ والاء الجندی نے یہ گانا پرنس عبداللہ الفیصل ایوارڈ برائے عربی شاعری کی تقریب میں گایا۔ سوشل میڈیا پر گردش کرنے والے ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شہزادہ خالد گانے کو داد دیتے ہوئے تالیاں بجا رہے اور گانے میں منہمک ہو کر اس کے سْروں سے ہم آہنگ ہاتھوں کے اشارے کر رہے اور چہرے کے تاثرات پیدا کر رہے ہیں۔

ویڈیو میں فنکارہ والاء الجندی کو دکھایا گیا وہ گانا گا رہی ہیں " فإن عهدي لم يَزل على الوِدادِ قيّم فإن عهدي لم يَزل على الوِدادِ قيّم، وعلى السَّنين والمدى مُجدَد لا يَهرم".

میرا محبت کا وعدہ اب بھی قائم ہے۔ میرا محبت کا وعدہ اب بھی قائم ہے، سال اور مدتوں کی تجدید ہوتی ہے اور ان کی عمر نہیں ہوتی۔

خادم حرمین شریفین کے مشیر، مکہ مکرمہ ریجن کے گورنر اور اکیڈی آف عربک پوئٹری کے بورڈ آف ٹرسٹیز کے چیئرمین شہزادہ خالد الفیصل نے عبد اللہ الفیصل ایوارڈ سرائے عربی شاعری کے فاتحین کو ایوارڈ دئیے۔ یہ تقریب جدہ کے گنبد ’’سپرڈوم‘‘ میں منعقد کی گئی تھی۔ بہترین نظم کا ایوارڈ عبدالعزیز سعود الباطین کو دیا گیا۔ انہیں یہ ایوارڈ اپنے گانے ’’ لن اسلاکم‘‘ پر دیا گیا۔ اس گانے کو تقریب میں گلوکارہ ولاء الجندی نے پیش کیا۔

اس گانے کو یوٹیوب پر 30 لاکھ سے زیادہ مرتبہ دیکھا گیا۔ اس گانے نے سعودی عرب میں مقبول موسیقی کی کیٹگری میں 13 پوزیشن حاصل کی۔

پرنس عبداللہ الفیصل ایوارڈ برائے عربی شاعری کے لیے بہترین گائی گئی نظم کے فاتح شاعر عبدالعزیز الباطین نے کہا کہ اس ایوارڈ کی اہمیت یہ ہے کہ یہ سعودی عرب کی جانب سے منعقدہ ایک بین الاقوامی ایوارڈ ہے۔ بین الاقوامی ثقافتی وزن کے ساتھ ساتھ یہ حقیقت یہ ہے کہ یہ ایوارڈ شاعر شہزادہ خالد الفیصل نے سپانسر کیا ہے اور اس میں مصنف شہزادہ عبد اللہ الفیصل کا نام ہے۔ یہ ایوارڈ ثقافتی اہداف کے حوالے سے جس چیز کی عکاسی کرتا ہے اس کے اثرات عرب اور بین الاقوامی ادبی اور ثقافتی منظرنامے پر ظاہر ہوتے ہیں۔

یاد رہے کہ پرنس عبداللہ الفیصل انعام برائے عربی شاعری سعودی نژاد ایک ادبی ایوارڈ ہے اور اس کی منزل عرب اور بین الاقوامی ہے۔ اس ایوارڈ نے گزشتہ برسوں میں شاندار کامیابی حاصل کی ہے، پہلے سیزن میں 47 شرکاء ، دوسرے میں 90، تیسرے میں 139 اور چوتھے سیزن میں 21 ملکوں سے 323 شرکا سے اس کی کامیابی کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں