سوڈان کی سریع الحرکت فورس کا اپنی وفادار فوج پرغیرملکی حملے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سوڈان کے دارالحکومت خرطوم میں دوسرے روز بھی متحارب فوج کے درمیان جھڑپیں جاری ہیں۔ اتوار کو سریع الحرکت فورس نے کہا ہے کہ پورٹ سوڈان میں غیر ملکی طیاروں کے ذریعے ان پر حملہ کیا جا رہا ہے۔

سریع الحرکت فورس کا کہنا ہے کہ اس نے پورٹ سوڈان میں ایک غیرملکی جنگی طیارے کو مار گرایا تاہم طیارے کے ملبے کی تفصیلات بیان نہیں کی گئیں۔

یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب سوڈانی فوج نے ریاست قضارف میں ریپڈ سپورٹ فورسز کے ہیڈ کوارٹر کا کنٹرول سنبھالنے کا اعلان کیا تھا۔ اس کے ساتھ ایک ویڈیو کلپ بھی دکھایا گیا تھا جس میں فوجیوں کو ہیڈ کوارٹر کا کنٹرول سنبھالنے کا جشن دکھایا گیا تھا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ہمیں "پورٹ سوڈان میں سریع الحرکت فورس پر غیر ملکی طیاروں سے حملہ کیا جا رہا ہے۔ ہم غیر ملکی مداخلت کے خلاف خبردار کرتے ہیں اور علاقائی اور بین الاقوامی رائے عامہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اس جارحیت کو روکیں اور اس رویے کی مذمت کریں۔"

اتوارکو صبح فجر کی اذانوں کےساتھ ہی سوڈان کی مسلح افواج اور منحرف سریع الحرکت فورس کے درمیان گھمسان کی لڑائی شروع ہوگئی تھی۔سوڈانی ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ فوج کے دو گروپوں میں لڑائی کے نتیجے میں بڑے پیمانے پر جانی نقصان ہوا ہے اور اب تک 56 عام شہری جا بحق ہوچکے ہیں۔

اتوار کی صبح سوڈانی مسلح افواج کی جنرل کمان نے ایک بیان میں اعلان کیا کہ "فتح کا وقت قریب ہے۔ سوڈانی عوام کوجلد خوش خبری ملے گی۔ جب کہ سریع الحرکت فورس نے ایک ویڈیو کلپ شائع کیا۔ اس کا کہنا تھا کہ سوڈانی فوج کی بری فورس کے ہیڈ کوارٹر پر حملہ دکھایا گیا تھا۔

سوڈانی فوج کے بیان میں کہا گیا ہے کہ فتح کی گھڑی قریب آ گئی ہے۔ ہمیں ان معصوم جانوں پر رحم آتا ہے جو باغی سریع الحرکت فورس کی طرف سے کی گئی اس لاپرواہی کی مہم جوئی کے نتیجے میں لی گئیں، زخمیوں کے لیے ہماری دعائیں اور ہم اان کے اہل خانہ کو ان کی جلد صحت یابی کی خوش خبری دیتے ہیں۔

اس کے ساتھ ہی سریع الحرکت فورس نے ایک ویڈیو کلپ شائع کیا جس میں انہوں نے کہا کہ سوڈانی فوج کی زمینی افواج کے ہیڈ کوارٹر کو نشانہ بنایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں