روسی صحافیوں کو ویزا دینے سے واشنگٹن کے انکار کو ہم معاف نہیں کریں گے: لاوروف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف نے اتوار کے روز کہا ہےکہ ان کا ملک اقوام متحدہ کے دورے پر پیر اور منگل کو ان کے ساتھ آنے والے روسی صحافیوں کو ویزا دینے سے انکار کرنے پر امریکا کو "معاف نہیں کرے گا"۔

نیویارک پہنچنے پرانہوں نے کہا کہ"ہم بھولیں گے نہیں اور معاف نہیں کریں گے" ۔ قبل ازیں انہوں نے روسی صحافیوں کو ویزے جاری نہ کرنے کےامریکی فیصلے کی مذمت کی تھی اور اسے بزدلانہ اقدام قرار دیا تھا۔
مذمت کرتے ہوئے، اسے "مضحکہ خیز" اور "بزدلانہ" قرار دیا۔

لاوروف کی ایک ویڈیو جسے روسی وزارت خارجہ کی ترجمان ماریا زاخارووا نے اپنے چینل "ٹیلی گرام" پرنشر کی اس میں انہوں نے کہا کہ "یہ ملک جو خود کو مضبوط، ہوشیار، آزاد اور سب سے زیادہ انصاف پسند کہتا ہے۔ مجھے یقین ہے کہ اس عمل نے آزادی اظہار اور معلومات تک رسائی کے تحفظ میں سچائی کے دعووں کو غلط ثابت کردیا ہے۔

ذلت آمیز

دوسری طرف سے روس کے نائب وزیر خارجہ سرگئی ریابکوف نے نیویارک میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف کے کام کی کوریج کے لیے روسی صحافیوں کو ویزا جاری نہ کرنے کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ واشنگٹن کو یقینی طور پر مناسب جواب ملے گا۔

امریکی ویزا
امریکی ویزا

ریابکوف نے صحافیوں کو بتایا کہ "میں آپ کو یقین دلاتا ہوں، ہم جواب دینے کے طریقے تلاش کریں گےاور امریکی اسے طویل عرصے تک یاد رکھیں گے۔"

لاوروف اور ان کے امریکی ہم منصب انٹننی بلنکن کے درمیان ملاقات کے امکان کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں ریابکوف نے کہا کہ "ایسا کوئی منصوبہ نہیں ہے، عام طور پر ہمارے پاس موجودہ وقت میں امریکیوں کے ساتھ وزارتی سطح پر بات کرنے کا کوئی ایجنڈا نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں