جنسی جرائم کے مرتکب امریکی تاجر نے چومسکی کو بھی رقم منتقل کی تھی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

حالیہ منکشف ہونے والی دستاویز میں جنسی جرائم کے مرتکب امریکی تاجر جیفری ایپسٹین کی متعدد معروف شخصیات کے ساتھ وابستگی کا انکشاف ہوا ہے۔ اس حوالے سے مزید معلوم ہوا ہے کہ یہ فہرست کہیں زیادہ وسیع ہے اور معاملہ ایسے تعلقات تک جا پہنچتا ہے جہاں معروف شخصیات کو بذریعہ بینک رقم منتقلی کی نوبت بھی آ جاتی ہے۔

ایک حالیہ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ایپسٹین نے ڈیڑھ لاکھ ڈالر اکیڈمک شخصیت لیون بوٹسٹین کو منتقل کیے۔ اس کے علاوہ 2 لاکھ 70 ہزار ڈالر معروف مصنف نوم چومسکی کے اکاؤنٹ میں بھی منتقل کیے تھے۔ وال سٹریٹ جنرل کے مطابق دونوں ماہرین تعلیم اور اکیڈمک شخصیات کو اس طرح فنڈز منتقلی سے واضح ہوتا ہے کہ ایپسٹین نے اپنے ساتھ وابستہ افراد کو کس طرح نوازا تھا۔

پروفیسر چومسکی نے انکشاف کیا ہے کہ وہ وقتاً فوقتاً اس تاجر سے سیاسی اور علمی موضوعات پر بات چیت کرتے رہتے ہیں۔ انہوں نے تصدیق کی کہ اسے مارچ 2018 میں ایپسٹین سے منسلک اکاؤنٹ سے تقریباً 2 لاکھ 70 ہزار ڈالر کی وائر ٹرانسفر موصول ہوئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ میرے اپنے فنڈز کو دوبارہ ترتیب دینے تک محدود تھا اور اس میں ایپسٹین کی طرف سے ایک پیسہ بھی شامل نہیں تھا۔

انہوں نے یہ وضاحت بھی کی کہ انہوں نے ایپسٹین سے ایک "تکنیکی معاملے" میں مدد مانگی جو اس نے اپنی پہلی شادی سے متعلق مشترکہ فنڈز کی تقسیم سے متعلق کہی تھی۔ انہوں نے واضح کیا کہ کہ اس نے مجھے ملازمت نہیں دی تھی۔ یہ ایک سادہ اور فنڈز کا فوری بینک ٹرانسفر تھا۔

متوازی طور پر نیو یارک میں بارڈ کالج کے صدر بوٹسٹین نے وضاحت کی ہے کہ انہوں نے سکول کے لیے رقم اکٹھا کرنے کی کوشش میں ایپسٹین سے ملاقات کی تھی۔ بوٹسٹین نے کہا کہ اسے 2016 میں ایپسٹین سے منسلک اکاؤنٹ سے تقریباً ڈیڑھ لاکھ ڈالر کے چیک موصول ہوئے۔

اس سال بارڈ کالج کو ایک ملین ڈالر سے زیادہ رقم بطور عطیہ ملی تھی۔ بوٹسٹین نے کہا کہ ایپسٹین نے مجھے کسی ادارے کے مشیر کے طور پر رکھا اور ادائیگیاں ایسے کیں جیسے وہ مشاورتی کام کے لیے فیس ہوں لیکن میں نے ایپسٹین کے لیے کوئی مشاورتی کام نہیں کیا تھا۔ بوٹسٹین کے ترجمان نے مزید کہا کہ یہ رقم شکریہ کے طور پر امریکہ کے مشاورتی بورڈ میں ایک سال کی خدمت کا معاوضہ ہے۔

اخبار نے اطلاع دی ہے کہ ایپسٹین نے 2012 میں فاؤنڈیشن قائم کی تھی اور اس چیریٹی کو مختلف مقاصد کے لیے رقم فراہم کرنے کے لیے استعمال کیا تھا۔

ایپسٹین کو 2008 میں جسم فروشی کا مطالبہ کرنے کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی۔ اس کے عالمی شہرت یافتہ شخصیات کے ساتھ سماجی تعلقات تھے۔

استغاثہ نے 2019 میں اس پر جنسی تعلقات کے لیے نابالغ لڑکیوں کا وسیع نیٹ ورک چلانے کا الزام لگایا۔ وہ 2019 میں جنسی سمگلنگ کے مقدمے کی سماعت کے انتظار میں اپنے سیل میں مردہ پایا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں