امریکا کا 6 ارب ڈالرکے غلط اندازے کے بعد یوکرین کو مزید ہتھیارمہیّا کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے یوکرین کے لیے 20 کروڑ ڈالر مالیت کے ہتھیاروں کے نئے پیکج کا اعلان کیا ہے۔ یہ یوکرین کے لیے اعلان کردہ 6.2 ارب ڈالر کے فنڈز میں سے اسلحہ کی پہلی قسط ہے اور امریکی حکام نے یہ بھی اعتراف کیا ہے کہ انھوں نے ماضی میں یوکرین کو مہیا کیے جانے والے ہتھیاروں کی قدر کا غلط تخمینہ لگایا تھا۔

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلینکن نے کہا ہے کہ پیر کے روز کے سکیورٹی پیکج پر پہلے سے منظور شدہ صدارتی دفاعی اتھارٹی (پی ڈی اے) کی جانب سے عمل درآمد کیا جائے گا، جس میں فضائی دفاعی ہتھیار، توپ خانے کا گولہ بارود اور بارودی سرنگوں کو صاف کرنے کے اضافی آلات شامل ہوں گے۔

انھوں نے کہا کہ روس ہر روز یوکرین کے شہریوں کو ہلاک کر رہا ہے اور شہری بنیادی ڈھانچے کو تباہ کر رہا ہے جبکہ بھوک کو ہتھیار بنا رہا ہے اور یوکرین کی شہری بندرگاہوں اور اناج کے بنیادی ڈھانچے کو تباہ کرکے عالمی سطح پرغذائی عدم تحفظ میں حصہ ڈال رہا ہے۔

وزیرخارجہ نے روس کے حملے کے پیش نظر امریکا کی جانب سے یوکرین کی 'جب تک ضرورت ہو' حمایت جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ایک عہدہ دار نے کہا کہ نیا وعدہ یوکرین کو پینٹاگون کے اسلحہ خانے سے اضافی ہتھیار مہیا کرنے کے لیے بحال کردہ اختیارات کے تحت متعدد پیکیجز میں سے پہلا ہوگا۔

یوکرین کے لیے سابقہ پی ڈی اے کے جائزے کے دوران میں پینٹاگون کے حکام کو یہ پتاچلا تھا کہ وہ یوکرین کے لیے منظور کردہ ہتھیاروں اور سازوسامان کی قدر کا غلط اندازہ لگا رہے تھے۔

اس کے بعد محکمہ دفاع کے عہدے داروں نے حسابات کے مناسب طریق کار کا استعمال کرتے ہوئے ایک جائزہ لیا اور 6.2 ارب ڈالر بحال کیے جو یوکرین کی فوری سکیورٹی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ہتھیار اور سازوسامان مہیا کرنے میں کانگریس کی مجاز ڈرا ڈاؤن اتھارٹی کے تحت استعمال کیے جا سکتے ہیں۔

واضح رہے کہ بائیڈن انتظامیہ نے 24 فروری 2022 کو روس کے یوکرین پر حملے کے بعد سے اب تک 43 ارب ڈالر سے زیادہ کی سیکیورٹی امداد کا وعدہ کیا ہے۔سنہ 2014 میں روس کے ابتدائی حملے کے بعد سے اب تک امریکا 46.1 ارب ڈالر مہیا کر چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں