قرآن بے حرمتی: ایران نے سویڈش اور ڈینش ناظم الامور کو طلب کرلیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کی وزارت خارجہ نے سویڈش اور ڈنمارک کے چارج ڈی افیئرز کو تہران میں طلب کر کے دونوں ملکوں میں قرآن مجید کے نسخوں کو نذر آتش کرنے اور بے حرمتی کرنے پر احتجاج کیا ہے۔

ڈنمارک اور سویڈن میں اسلام مخالف افراد نے حالیہ مہینوں میں مسلمانوں کی مقدس کتاب کے متعدد نسخوں کو ۔ معاذ اللہ ۔ نذر آتش کیا یا نقصان پہنچایا ہے۔ قرآن کریم کی اس بے حرمتی پر مسلم دنیا میں غم و غصہ پایا جاتا ہے اور نورڈک حکومتوں سے مطالبہ کیا جارہا ہے کہ ایسی کارروائیوں پر پابندی لگائی جائے۔ دونوں ممالک کی حکومتوں نے ان اقدامات کی مذمت کی اور کہا ہے کہ وہ ایسے نئے قوانین پر غور کر رہے ہیں جن کا مقصد ایسی کارروائیوں کو روکنا ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے انسانی حقوق کے شعبے کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران قرآن پاک کی بے حرمتی کی مکمل ذمہ داری اور سنگین نتائج سویڈش اور ڈنمارک کی حکومتوں پر عائد کرتا ہے۔

خیال رہے سویڈن میں اس سال چار مرتبہ قرآن کریم کی بے حرمتی کی جسارت کی گئی ہے۔ 21 جنوری، 28 جون، 20 جولائی اور 15 اگست کو کی جانے والی ایسی گھناؤنی حرکت پر اسلامی دنیا میں غم و غصہ کی لہر دوڑ گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں