فلسطین اسرائیل تنازع

واشنگٹن۔ فلسطینیوں کے حق میں سب سے بڑا احتجاج،غزہ میں فوری جنگ بندی کا مطالبہ

جوبائیڈن پر مظاہرین کی طرف سے نسل کشی کی حمایت کا الزام عاید، اسرائیل کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں ہفتے کے روز ہزاروں شہریوں نے اسرائیل کی غزہ پر بمباری کے خلاف اور جنگ بندی کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین اسرائیل کی سویلینز آبادی کے خلاف جارحیت اور صدر جوبائیڈن انتظامیہ کی اسرائیل حماس جنگ کے بارے میں پالیسی کی بھی مذمت کر رہے تھے۔

مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے، جن پر تحریر تھا' فلسطینیوں کی زندگیاں اہم ہیں۔ غزہ کو جینے دو ۔۔ غزہ والوں کا خون تمہارے ہاتھوں پر ہے۔' ان نعروں والے کتبوں کی وجہ جنگ بندی کے خلاف پالیسی ہے۔ جس کے تحت امریکی انتظامیہ نہیں چاہتی کہ مکمل اور مستقل جنگ بندی کیا جائے۔

البتہ امریکی انتظامیہ بمباری میں وقفے کے دوران جنگ بندی چاہتی ہے تاکہ مغویوں کو غزہ سے نکالنے کا امکان پیدا ہو اور انسانی بنیادوں پر امدادی اشیا کی فراہمی ممکن ہوتی رہے۔

ہفتے کے روز واشنگٹن میں احتجاجی مظاہرہ منظم کرنے والے کارکنوں نے اس احتجاج کو ' نیشنل مارچ آن واشنگٹن: فری فلسطین ' کانام دیا تھا۔ امریکہ کے مختلف شہروں سے مظاہرین کے واشنگٹن پہنچنے کے لیے بسوں کا اہتمام کیا گیا تھا۔ احتجاج منظم کرنے والے گروپ کی طرف سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ 'جنگ روکنے کے لیے اقدام کرو اور نسل پرستی کا خاتمہ کرو۔'

4 نومبر 2023 کو واشنگٹن ڈی سی میں فلسطینیوں کی حمایت میں ریلی کے دوران مظاہرین فریڈم پلازہ میں جمع ہیں۔ (اے ایف پی)
4 نومبر 2023 کو واشنگٹن ڈی سی میں فلسطینیوں کی حمایت میں ریلی کے دوران مظاہرین فریڈم پلازہ میں جمع ہیں۔ (اے ایف پی)

مظاہرین بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں آزادی کے لیے لگائے جانےوالی کشمیریوں کے نعروں کی طرح نعرے لگا رہے تھے ' ہمیں کیا چاہیں آزادی۔' ' تیرا باپ بھی دے گا آزادی'۔

مبصرین کے مطابق ہفتے کے روز واشنگٹن میں ہونے والا احتجاجی مظاہرہ فلسطینی عوام کے حق میں حالیہ برسوں کے دوران ہونےوالے سب مظاہروں سے بڑا تھا۔ ہجوم وائٹ ہاؤس کے نزدیک فریڈم پلازہ پر اکٹھا ہونا شروع ہوا۔ شروع میں ایک لمحے خاموشی اختیار کی گئی۔

واضح رہے اسرائیل نے غزہ پر اوپر سے مسلسل بمباری جاری رکھنے کے علاوہ زمین سے غزہ کا مسلسل محاصرہ کر رکھا ہے۔ اس دوران اب تک 9488 شہری شہید ہو چکے ہیں۔ ان میں بڑی تعداد عورتوں اور بچوں کی ہے۔

حمایت میں ریلی کے دوران مظاہرین آزادی پلازہ میں جمع ہیں۔
حمایت میں ریلی کے دوران مظاہرین آزادی پلازہ میں جمع ہیں۔

فلسطینیوں کی ان مسلسل بڑھتی ہوئی ہلاکتوں کی وجہ سے دنیا بھر سے جنگ بندی کا مطالبہ سامنے آرہا ہے۔لیکن اسرائیل کی طرح واشنگٹن بھی سمجھتا ہے کہ جنگ بندی کرنے سے حماس کو سنبھلنے کا موقع مل جائے گا۔

تاہم واشنگٹن میں وائٹ ہاوس کے قریب تر آکر احتجاج کرنے والے ہزاروں شہری نعرے لگا رہے تھے ' بائیڈن تم چھپا نہیں سکتے ہوئے ۔۔۔ تم فلسطینیوں کی نسل کشی کر رہے ہو ۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں