امریکا: مسلمان طالبہ کے اسرائیلی جھنڈے پر اعتراض کے جواب میں اس کا سرقلم کرنےکی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے جارجیا میں مڈل سکول کے ایک استاد کو اس وقت گرفتار کر لیا گیا جب گواہوں نے پولیس کے تفتیش کار کو بتایا کہ اس نے ایک طالبہ کا اس وقت سر قلم کرنے کی دھمکی دی جب اس نے کلاس میں اسرائیلی پرچم لہرانے پر اعتراض کیا۔

ہیوسٹن کاؤنٹی جیل کے ریکارڈ کے مطابق وارنر رابنز مڈل اسکول کے ایک استاد بنجمن ریز کو 8 دسمبر کو دہشت گردی کی دھمکیاں دینے اور بچوں پر ظلم کرنے کے الزام میں حراست میں لیا گیا تھا۔ تاہم اسے دو دن بعد ضمانت پر رہا کر دیا گیا۔

ہیوسٹن کاؤنٹی کے ڈسٹرکٹ اٹارنی ولیم کینڈل نے کہا کہ مسٹر ریز نے عوامی محافظ کی درخواست کی لیکن اسے سکیورٹی فراہم نہیں کی گئی۔ طالبہ نے پولیس تفتیش کار کو بتایا کہ وہ جھنڈا دیکھنے کے بعد 7 دسمبر کو ریزکی کلاس میں گئی اور اسے بتایا کہ اسے یہ ناگوار لگا کیونکہ اسرائیلی فلسطینیوں کو مار رہے ہیں۔

طالبہ کے مطابق ریز نے غصے سے کہا کہ وہ یہودی ہے اور لڑکی پر یہود دشمنی کا الزام لگایا۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ انہوں نے ریز کو طالبہ کی توہین کرتے ہوئے اسے سرقلم کرنے کی دھمکی دیتے سنا تھا۔

ہیوسٹن کاؤنٹی اسکول ڈسٹرکٹ کی ترجمان جینیفر جونز نے ایک بیان میں کہا کہ ریز 7 دسمبر سے مڈل اسکول میں واپس نہیں آئی ہیں۔

کینڈل نے کہا کہ اس استاد کی ضمانت کی شرائط کے تحت اسے اسکول اور طالبہ سے دور رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ پراسیکیوٹر نے مزید کہا کہ وہ اگلے ماہ گرینڈ جیوری سے فرد جرم عائد کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ غزہ کی پٹی میں جنگ جاری رہنے کے ساتھ ہی امریکا میں مسلمانوں کو نشانہ بنانے کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے ۔

حماس نے سات اکتوبر کو اسرائیل پر حملہ کرکے سات افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا جس کے جواب میں اسرائیل نے غزہ کی اینٹ سے اینٹ بجا دی ہے اور ہزاروں افراد کو شہید زخمی اور گرفتار کرلیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں