رہائی نہ ملنے پر مجرم کا کمرہ عدالت میں خاتون جج پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی شہر لاس ویگاس میں ایک سیاہ فام مجرم نے سزا سننے کے بعد کمرہ عدالت میں خاتون جج پر حملہ کردیا۔ خاتون جج نے مجرم کو عبوری ضمانت دینے سے انکار کردیا تھا۔

تیس سالہ ڈیوبرا ریڈن کو تین بار پہلے بھی گرفتار کیا گیا تھا۔ کلارک کائونٹی کی ڈسٹرکٹ کورٹ کی جج میری کے ہالتھس نے اسے سزا سنائی۔ ڈیوبرا ریڈن پر ایک شخص کو بری طرح زد و کوب کرنے کا الزام تھا۔

میری ہالتھس نے بتایا کہ ڈیوبرا ریڈن کے وکیل نے عبوری ضمانت کی استدعا کی تھی مگر ریڈن کا ٹریک ریکارڈ دیکھتے ہوئے میں نے سوچا کہ اس بات اسے سزا کا مزا چکھنا ہی چاہیے۔

سزا سنتے ہی ڈیوبرا ریڈن اپنی بینچ سے اسپرنگ کی طرح اچھلا اور جج میری ہالتھس کو گرادیا۔ اس حملے کے دوران ڈیوبرا ریڈن نے جج میری ہالتھس کو دبوچ کر زد و کوب بھی کیا اور مغلظات بھی بکتا رہا۔

مجرم کی حرکت سے عدالت میں کھلبلی مچ گئی۔ الارم بجایا گیا تاکہ خاتون جج کو بچایا جاسکے۔ انہیں بچانے کے لیے لوگ تیزی سے لپکے۔ فوٹیج میں مجرم اور لوگوں کے درمیان دھینگا مشتی دیکھی جا سکتی ہے۔

عدالت کے ایک افسر نے ڈیوبرا ریڈن کو ایک طرف ہٹایا تاہم وہ پلٹ کر جج پر پھر حملہ آور ہوا۔ وہاں موجود لوگوں نے مجرم پر قابو پایا اور اسے ہتھکڑیاں لگا کر جیل بھیج دیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں