فرانس میں یورپی یونین کے انتخابات کے لیے پولنگ، قیدی ووٹ ڈالنے کے بعد فرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس میں جیل اور استغاثہ سے متعلق ذرائع نے بین الاقوامی خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' کو بتایا ہے' یورپی یونین کے انتخابات کے لیے ووٹ ڈالنے کے بعد جنوبی فرانس میں ایک قیدی حراست سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا ہے۔'

ذرائع کے مطابق یہ فرانسیسی شہری فرانس کے جنوبی شہر ارلس کی ایک جیل سے ووٹ ڈالنے کے لیے پولیس کی نگرانی میں عبوری طور پر جیل سے باہر پولنگ سٹیشن تک لایا گیا تھا کہ موقع پر فرار ہو گیا۔

ووٹنگ کے عمل کا حصہ بننے کے لیے جب اسے جیل سے باہر لایا گیا تو اس کے ساتھ ایک پروبیشن آفیسر اور جیل کا ایک محافظ بھی تھا۔ ذرائع نے بتایا کہ جب وہ پولنگ سٹیشن سے نکل رہے تھے تو اس وقت فرار ہو گیا جب اسے ایک گاڑی میں سوار ہونا تھا جو اسے واپس جیل لے جانے والی تھی۔

پبلک پراسیکیوٹر کے دفترسے 'اے ایف پی' کو بتایا گیا ہے کہ اس شخص کو ابتدائی طور پر منشیات کی اسمگلنگ کے جرم میں تین سال کی سزا سنائی گئی تھی، پھر اسے دلالی کے جرم میں مزید آٹھ سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ تاہم اس کی رہائی 2026 میں متوقع تھی۔

ذرائع کے مطابق وہ بظاہر بڑا پر سکون رہنے والا قیدی تھا اور اس کے لیے قید کی تھوڑی سزا باقی رہ جانے پر یہ ناقابل فہم ہے کہ وہ فرار ہو کر دوبارہ جیل جانے کا راستے پر کیوں چل پڑا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں