سعودی مذہبی پولیس چیف پر ناکام قاتلانہ حملے کی خبروں کی تردید

"آل الشیخ پر نماز فجر کے وقت حملے کی کوشش کی گئی تھی"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں اسلامی اقدار کی پابندی یقینی بنانے سے متعلق مذہبی پولیس "امر بالمعروف و نہی عن المنکر" کی جانب سے ادارے کے سربراہ عبدالطیف آل الشیخ پر قاتلانہ حملے سے کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیا گیا ہے۔

محکمہ امر بالمعروف کے ترجمان ترکی الشلیل نے اپنے ایک وضاحتی بیان میں بتایا ہے کہ قومی اخبار "الوطن" میں آل الشیخ پر ناکام قاتلانہ حملے کی خبر میں کوئی صداقت نہیں۔ ان کے ساتھ ایسا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مذہبی پولیس چیف عبدالطیف آل الشیخ پر قاتلانہ حملے سے متعلق خبر جس ذریعے سے بھی دی گئی ہے وہ غلط ہے کیونکہ ایسا کوئی واقعہ سرے سے ہوا ہی نہیں ہے۔

خیال رہے کہ سعودی اخبار"الوطن" نے اپنی حالیہ اشاعت میں دعوی کیا تھا کہ مذہبی پولیس سربراہ عبدالطیف آل الشیخ کو نماز فجر کے وقت ٹارگٹ کلنگ کی کوشش کی گئی تھی۔ رپورٹ کے مطابق ایک نامعلوم کارسواروں نے پولیس سربراہ کو ان کے گھر سے مسجد کے لیے نکلتے وقت اپنی کار سے کچلنے کی کوشش کی لیکن وہ بچ نکلنے میں کامیاب رہے تھے جبکہ حملہ آور بھی فرار ہو گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں