سعودی عرب میں ٹیکسی کا حصول بذریعہ موبائل فون اپیلی کیش ممکن

ستر لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری سےعرب دنیا میں عوامی سہولت کا منصوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ساٹھ سے ستر ہزار ٹیکسیوں کو اسی سال سے موبائل فون اپیلی کیشن کے ذریعے ایک نظام سے منسلک کرنے کا آغاز کر دیا جائے گا جس کے نتیجے ٹیکسیوں اور ان کے ماڈلز کے علاوہ ڈرائیورز کے بارے میں سارا ڈیٹا گھر بیٹھے شہریوں کی دسترس میں ہوگا۔

اس سسٹم کے آئندہ چند دنوں میں سعودی عرب میں نفاذ سے خواتین، کاروباری کمپنیوں اور تاجروں کو بطور خاص سہولت میسر آ جائے گی۔ گھر یا دفتر میں بیٹھے لوگ چند لمحوں می اپنی پسند کی گاڑی اور ڈرائیور سے رابطے میں آ سکیں گے۔

سعودی عرب جہاں عام خواتین روائتی طور پر خود گاڑی چلانا پسند نہیں کرتیں انہیں سہولت دینے کیلیے جرمنی کی کاروباری کمپنی سات ملین ڈالر کی سرمایہ کاری سے بذریعہ موبائل فون '' ٹیکسی آرڈرنگ موبائل ایپلی کیشن سسٹم متعارف کرا رہی ہے۔"

اسی سال یہ سہولت متحدہ عرب امارات میں بھی فراہم ہو جائے گی جبکہ بعد ازاں اردن اور لبنان وغیرہ میں بھی یہ سہولت دستیاب ہو گی۔

جدید آئی ٹی ٹیکنالوجی موبائل فون کے ذریعے استعمال کی سہولت صارفین کے لیے مفت دستیاب ہو گی۔ کرائے پر ٹیکسی حاصل کرنے والے شہری ڈرائیورز سے کرائے کا تعین بھی اسی موبائل فون کے ذریعے کر سکیں گے۔

''راکٹ انٹر نیٹس'' کے ڈائریکٹر ایاد الکسار کا کہنا ہے کہ ''موبائل فونز کی ایپلی کیشنز کے حوالے سے یہ اس پورے خطے میں اب تک کی ایک بڑی سرمایہ کاری ہے۔ جس کی بدولت سعودی عرب میں ساٹھ سے ستر ہزار ٹیکسی گاڑیاں جدید سسٹم سے منسلک ہوں گی۔'' بعد ازاں متحدہ عرب امارات میں بھی دسیوں ہزار گاڑیاں اس سے منسلک کیے جانے کا امکان ہے۔

واضح رہے بھاری سرمایہ کاری کرنے والا گروپ ا س سے قبل ''ہیلو فوڈز'' کے نام سے آٹھ ملین ڈالر کی سرمایہ کاری بھی کر چکا ہے۔ اسی طرح دبئی میں آن لائن کپڑوں کی خریداری کے حوالے سے بھی اس کا منصوبہ چل رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں