.

دبئی: سرکاری ملازمین کی تنخواہوں، بونس میں 30 سے100% اضافہ

حکومتی فیصلے سے 32 اداروں کے ہزاروں ملازمین مستفید ہوں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے عالمی تجارتی اور سیاحتی مرکز دبئی کی حکومت نے شہرکے تمام سرکاری ملازمین کی تنخواہوں، مراعات اور بونس میں تیس سے سو فی صد اضافے کا اعلان کیا ہے۔ حکومتی فیصلے کے بعد شہریوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔

اقتصادی ماہرین کا کہنا ہے کہ دبئی کی حکومت کی جانب سے ملازمین کی تنخواہوں میں غیر معمولی اضافے سے معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے اور ملازمین کا حکومت پراعتماد بھی بڑھے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دبئی ایگزیکٹو کونسل کے چیئرمین اور یو اے ای اے کے ولی عہد شہزادہ الشیخ حمدان بن راشد آل مکتوم کی زیرصدارت اعلیٰ سطحی حکومتی اجلاس میں دبئی کے 32 سرکاری محکموں کے ملازمین کی تنخواہوں اور مراعات میں اضافے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس کے بعد دبئی کے سرکاری محکموں کے ملازمین کی بنیادی تنخواہوں میں 30 سے 100 فی صد تک اضافے کا اعلان کیا گیا۔ فیصلے کے مطابق تنخواہوں میں اضافے کا اطلاق رواں سال جون سے کیا جائے گا تاہم ان کا اجراء رواں دسمبر سے ہوگا۔

رپورٹ کے مطابق بتیس فی صد ملازمین کو تنخواہوں کے ساتھ اضافی بونس دیا جائے گا۔ تنخواہوں میں اضافے کے مطابق ملازمین کو مجموعی طور پر 21 گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ اسی تقسیم کے مطابق ملازمین کو تنخواہیں جاری کی جائیں گی۔

درایں اثناء دبئی حکومت ڈائریکٹرجنرل مالیات عبدالرحمان صالح آل صالح کا کہنا ہے کہ ملازمین کے لیے تنخواہوں میں کیا گیا اضافہ رواں ماہ دسمبر سے انہیں جاری کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ولی عہد شہزادہ حمدان بن محمد آل مکتوم کے فیصلے سے دبئی کے 22 ہزار سرکاری ملازمین اضافی بونس سے بھی مستفید ہوں گے۔

عبدالرحمان آل صالح کا کہنا تھا کہ دبئی حکومت نے سال 2014ء کے دوران سرکاری شعبوں کی بہبود کے لیے 37 فی صد بجٹ مختص کیا تھا۔ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ اسی بجٹ کا حصہ ہے۔

خیال رہے کہ دبئی حکومت نے سرکاری ملازمین کی مراعات اور تنخواہوں میں اضافے کا فیصلہ ایک ایسے وقت میں کیا ہے جب دبئی کو "ایکسپو2020" کی نمائش کی میزبانی ملنے کے بعد ملازمین کی روز مرہ کی مصروفیات بھی بڑھ گئی ہیں۔