.

سعودی عرب کیخلاف منفی پراپیگنڈہ، توڑ کیلیے وزارت خارجہ متحرک

سفارتکاروں کی ذمہ داری ہے کہ منفی تاثر کا تدارک کریں ، شہزادہ سعود الفیصل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ سعود الفیصل نے دنیا بھر میں سعودی سفیروں اور دیگر سفارتی ذمہ داروں پر زور دیا ہے کہ وہ سعودی عرب کے خلاف منفی مہمات کا توڑ کرنے کیلیے اپنی تجاویز و تجربات سے آگاہ کریں اور اپنے اپنے دائرہ کار میں مملکت سعودیہ کا صحیح تشخص پیش کریں۔

اس مقصد کیلیے وزارت خارجہ کے تحت مختلف پہلووں کا جائزہ لینے کیلیے سنئیر سفارتی حکام پر مشتمل ایک ورکنگ ٹیم بھی تشکیل بھی دے رہی ہے۔ وزیر خارجہ نے اس امر اظہار سعودی سفیروں کی کانفرنس کے موقع پر کیا ہے۔

واضح رہے عالمی سطح پر مشرق وسطی کے بارے میں ہونے والے اہم فیصلوں اور پیش آنے والے واقعات کے بعد سعودی سفیروں کا یہ اہم اور بھرپور اجتماع تھا۔

رپورٹس کے مطابق تشکیل پانے والی ورکنگ ٹیم سعودی تشخص کو اجاگر کرنے اور منفی پراپیگنڈہ کے اثرات کو روکنے کیلیے متعین تجاویز سامنے لائے گی۔ یہ سفارشات رہنمائی کے خطوط کی صورت میں تمام سفارتخانوں اور سفارتکاروں تک پہنچائی جائیں گی، تاہم سفیروں سے بھی کہا گیا ہے کہ وہ اپنی تجاویز ورکنگ ٹیم کو ارسال کریں۔

شہزادہ سعود الفیصل کا اس موقع پریہ بھی کہنا تھا '' منفی پراپیگنڈے کی ایک وجہ میڈیا کی حالیہ لہر کے علاوہ سوشل میڈیا کا رائے عامہ کو غیر معمولی طور پر متاثر کرنا ہے۔'' انہوں نے مزید کہا '' اس لیے ضرورت اس بات کی ہے کہ سعودی عرب کے بارے میں منفی اطلاعات کی مہمات کا موئثر توڑ کرنے کیلیے کوششیں بروئے کار لائی جائیں۔''