اقوام متحدہ کا شام میں قحط سالی کا انتباہ

بارشیں نہ ہوئیں تو لاکھوں شامیوں کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہوجائیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اقوام متحدہ کے تحت خوراک کے ادارے نے خبردار کیا ہے کہ شام کو خشک سالی کی وجہ سے قحط کا سامنا ہو سکتا ہے اور اس سے لاکھوں لوگوں کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہو جائیں گے۔

عالمی خوراک پروگرام (ڈبلیو ایف پی) کی خاتون ترجمان ایلزبتھ بائرس نے منگل کو ایک بیان میں کہا ہے کہ خشک سالی کی وجہ سے شام کے شمال مغربی علاقے میں گندم کی پیداوار میں سترہ لاکھ سے بیس لاکھ میٹرک ٹن تک کمی واقع ہوئی ہے۔

ترجمان نے کہا کہ ''اگر مئی کے وسط میں آیندہ فصل کی کاشت کے موقع پر بارشیں نہیں ہوتی ہیں تو خوراک کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہوجائے گا اور شام کو گذشتہ سیزن کے لیے ؛درکار اکاون لاکھ میٹرک ٹن سے بھی زیادہ گندم درآمد کرنا پڑے گی''۔

بائرس نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ''عالمی خوراک پروگرام کو ملک کے شمال مغربی علاقے میں قحط کے منڈلاتے ہوئے خطرے کے اثرات پر تشویش لاحق ہے۔شمال مغربی صوبوں حلب ،ادلب اور حماہ میں سالانہ اوسط سے بھی کم بارشیں ہوئی ہیں۔اس کے آیندہ فصل کی کاشت پر بھی اثرات مرتب ہوں گے اور اگر خشک سالی برقرار رہتی ہے تو پھر لاکھوں لوگوں کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہوجائیں گے''۔

ترجمان کے بہ قول اس وقت بیالیس لاکھ شامیوں کو خوراک کی ہنگامی امداد کی ضرورت ہوتی ہے مگر خشک سالی کے بعد یہ تعداد بڑھ کر پینسٹھ لاکھ ہوجائے گی۔ عالمی خوراک پروگرام نے مارچ میں اکتالیس لاکھ شامیوں کی ریکارڈ تعداد کو خوراک مہیا کرنے کا انتظام کیا تھا لیکن امداد دینے والے ممالک اور اداروں کی جانب سے رقوم نہ ملنے کی وجہ سے بھوک کا شکار شامیوں کے لیے خوراک کے پارسلوں کا حجم کم کردیا گیا تھا۔

شام کو قبل ازیں 2008ء میں خشک سالی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔اس کے تین سال کے بعد 2011ء کے اوائل میں صدر بشارالاسد کے خلاف عوامی مزاحمتی تحریک شروع ہوگئی تھی جو چند ہی ماہ میں مکمل خانہ جنگی کی شکل اختیار کرگئی اور آج تین سال کے بعد ڈیڑھ لاکھ سے زیادہ افراد اس خانہ جنگی میں ہلاک ہوچکے ہیں۔

شامی فوج اور باغی جنگجوؤں کے درمیان لڑائی کے نتیجے میں نوے لاکھ سے زیادہ افراد بے گھر ہوئے ہیں اور ان میں چھبیس لاکھ پڑوسی ممالک میں پناہ گزین کیمپوں میں مہاجرت کی زندگی گزار رہے ہیں۔اقوام متحدہ کے پناہ گزینوں کے ادارے نے منگل کو خبردار کیا ہے کہ اگر ملک میں بارشیں نہیں ہوتی ہیں تو اپنا گھر بار چھوڑ کر سرحدپار دوسرے ممالک کا رُخ کرنے والے شامیوں کی تعداد میں اضافہ ہوجائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں