سلیم الجبوری عراقی پارلیمان کے نئے سپیکر منتخب

اعتدال پسند رہ نما میسوپوٹیمیا یونیورسٹی میں قانون کے پروفیسر رہ چکے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق کی پارلیمان نے سنی اسلامی جماعت سے تعلق رکھنے والے اعتدال پسند سیاست دان سلیم الجبوری کو اپنا نیا سپیکر منتخب کر لیا ہے۔

عراق کے سرکاری ٹیلی ویژن کی اطلاع کے مطابق تینتالیس سالہ سلیم الجبوری واضح اکثریت سے سپیکر منتخب ہوئے ہیں۔منگل کو سپیکر کے انتخاب کے وقت ایوان میں موجود دو سوتہتر ارکان نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔ان میں ایک سو چورانوے نے جبوری کے حق میں ووٹ ڈالا۔ان کے مدمقابل سیکولر لسٹ پر کامیاب ہونے والے رکن پارلیمان کو صرف انیس ووٹ ملے جبکہ باقی ووٹ کالعدم قراردے دیے گئے ہیں۔

سلیم الجبوری اسلامی جماعت کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل ہیں۔وہ میسوپوٹیمیا یونیورسٹی میں قانون کے پروفیسر رہے ہیں اور وہ عراق کا نیا دستور تیار کرنے والی کمیٹی کے بھی رکن تھے۔وہ عراقی پارلیمان کی انسانی حقوق کمیٹی کے بھی رکن رہ چکے ہیں۔

عراقی پارلیمان کے نئے سپیکر کا انتخاب عام انتخابات کے ڈھائی ماہ کے بعد کیا گیا ہے۔سپیکر کا عہدہ عراق کے اہل سنت کے لیے مختص ہے۔وزیراعظم کا انتخاب اہل تشیع میں سے کیا جاتا ہے جبکہ صدر کرد ہوتا ہے۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوا کہ سلیم الجبوری کا انتخاب وزارت عظمیٰ اور صدر کے عہدے کے لیے وسیع تر اتفاق رائے کے بعد کیا گیا ہے کیونکہ ابھی وزیراعظم کے نام پر عراق کے تمام سیاسی دھڑوں میں اتفاق رائے نہیں ہوسکا ہے۔

نوری المالکی تیسری مدت کے لیے وزیراعظم بننا چاہتے ہیں لیکن باقی سیاسی دھڑے ان کی حمایت کو تیار نہیں اور خود اہل تشیع کی سرکردہ مذہبی شخصیات بھی ان کی مخالفت کررہی ہیں لیکن وہ وزارت عظمیٰ سے دستبردار ہونے کو تیار نہیں اور ان کا یہ دعویٰ ہے کہ 30 اپریل کو منعقدہ عام انتخابات میں ان کے زیرقیادت اتحاد نے سب سے زیادہ نشستیں حاصل کی تھیں ،اس لیے وزیراعظم نامزد کرنے کا اختیار بھی اس کو حاصل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں