.

ہیلی کاپٹر حادثے میں عراقی خاتون رکن پارلیمنٹ زخمی

فیان دخیل کا تعلق اقلیتی قبیلے 'یزیدی' سے ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے شمال مغرب میں جبل سنجار میں پھنسے یزیدی قبیلے کے افراد کومحفوظ مقام تک منتقل کرنے والے ایک فوجی ہیلی کاپٹرکو حادثہ پیش آیا جس کے نتیجے میں عملے کا ایک رکن ہلاک اور کم سے کم آٹھ افراد زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں عملے کےپانچ ارکان اور 'یزیدی' قبیلے کی خاتون رکن پارلیمنٹ فیان دخیل بھی شامل ہیں۔

عراق کے ایک عسکری نے بتایا کہ "ایم 17" طرز کے فوجی ہیلی کاپٹر کے ذریعے شمال مغربی علاقے جبل سنجار سے شدت پسند تنظم داعش کے حملوں کے بعد فرار ہونے والے یزیدی قبیلے کے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا تھا کہ اس دوران ریسکیو ہیلی کاپٹر کو حادثہ پیش آ گیا اور وہ فضاء سے زمین پرآ گرا۔ تاہم زیادہ بلندی پر نہ ہونے کے باعث ہیلی کاپٹرمیں سوار افراد زندہ بچ گئے۔ جہازمیں عملے کا ایک رکن ہلاک اور پانچ زخمی ہوئے ہیں جبکہ یزیدی قبیلے سے تعلق رکھنے والی عراقی رکن پارلیمنٹ فیان دخیل سمیت دیگر پناہ گزین بھی زخمی ہوئے ہیں۔

قبل ازیں عراقی ٹی وی نے فوج کے ترجمان جنرل قاسم عطاء کے حوالے سے یہ خبردی تھی کہ جبل سنجار میں فوج کا ایک ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہو گیا ہے جس کے نتیجے میں ہیلی کاپٹر کا ایک پائلٹ ہلاک اور متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں عراقی رکن پارلیمنٹ فیان دخیل بھی شامل ہیں۔

خیال رہے کہ جبل سنجار سے گذشتہ ہفتے یزیدی اقلیت سے تعلق رکھنے والے ہزاروں افراد صوبہ کردستان کی جانب اس وقت فرار ہوگئے تھے جب شدت پسند تنظیم "داعش" نے علاقے پرحملہ کردیا تھا۔