.

مصر : ایک مکان پر راکٹ حملے میں دس افراد ہلاک

ہلاک شدگان میں 3 بچے اور 3 خواتین بھی شامل ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے جزیرہ نماء سینا میں ایک مکان پر کیے گئے راکٹ حملے کے نتیجے میں بچوں اور عورتوں سمیت دس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

راکٹ حملے میں ہلاک ہونے والوں میں تین بچے، تین عورتیں اور چار مرد شامل ہیں۔ تاہم فوری طور پر واضح نہین ہو سکا کہ یہ راکٹ حملہ ایک فوجی ہیلی کاپٹر سے کیا گیا ہے جو عسکریت پسندوں کی تلاش میں تھا یا راکٹ حملہ عسکریت پسندوں کی طرف سے کیا گیا۔

یہ افسوسناک واقعہ سرحدی قصے رفح کے جنوب میں پیش آیا ہے۔ ہلاکتوں کی سکیورٹی سے متعقہ حکام اور مقامی طبی حکام نے بھی تصدیق کر دی ہے۔

واضح رہے سیناء میں مصری فوج ان عسکریت پسندوں کے آپریشن کر رہی ہے، جنہوں نے پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی برطرفی کے بعد سے اسی علاقے میں اب تک بیسیوں پولیس اہلکاروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

محمد مرسی کو جولائی 2013 میں اس وقت کے فوجی سربراہ نے برطرف کیا تھا۔ اب مرسی کی جگہ فوجی سربراہ خود منتخب صدر کے طور پر موجود ہے جبکہ مرسی جیل میں ہے۔ اس علاقے میں اکثر ہونے والی کارروائیوں کی ذمہ داری عسکری گروپ انصار بیت المقدس نے قبول کی ہے۔ اس گروپ نے حالیہ دنوں میں ہی داعش کے ساتھ وابستگی اختیار کرنے کا اعلان کیا ہے۔

انصار بیت امقدس نے ماہ اکتوبر میں سیناء میں ایک چیک پوانٹ پر حملے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ بعد ازاں مصر نے اس علاقے میں ہنگامی حالت کا نفاذ کر کے عسکریت پسندوں کے خلاف کارروائی شروع کی۔ ماہ اکتوبر کے دھماکے میں بڑی تعداد میں سکیورٹی اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔