.

روسی وزراء مصر پہنچ گئے، بلیک باکس ملنے کی تصدیق

طیارے کی تباہی میں کسی دہشت گردی کا امکان خارج از امکان ہے: قاہرہ، ماسکو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری ایوی ایشن ذرائع نے بتایا کہ ہفتے کی شب رات گئے روس کے ہنگامی حالات اور ٹرانسپورٹ کے دو وزراء قاہرہ پہنچنے ہیں۔ ان کے ہمراہ ریسکیو ماہرین اور تفتیش کاروں کی ٹیم بھی قاہرہ آئی ہے۔

مصری حکام نے اس سے پہلے تباہ ہونے والے روسی مسافر جہاز کا فلائٹ ریکارڈ محفوظ رکھنے والے دونوں 'بلیک باکس' ملنے کی تصدیق کی تھی۔ بلیک باکس کا ریکارڈ ڈی کوڈ ہونے پر ہی یہ واضح ہو سکے گا کہ بدقسمت مسافر طیارہ کو حادثہ کیسے پیش آیا؟ حادثے میں جہاز پر سوار تمام ۲۲4 مسافر اور عملے کے 7 ارکان ہلاک ہو گئے تھے۔

ادھر مصری وزیر اعظم انجینئر شریف اسماعیل نے بتایا ہے مصری شہری ہوابازی کی وزارت کے عملے نے مسلح افواج کے ساتھ کوارڈی نیشن کے ساتھ تباہ شدہ روسی طیارے کے دونوں بلیک باکس ملبے سے نکال لئے۔

ہفتے کی شب ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شریف اسماعیل نے بتایا کہ ملبے سے 129 لاشیں نکال لی گئی ہیں اور انہیں فوج کی نگرانی میں سوئیز کے کبریت ہوائی اڈے پر منتقل کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تباہ شدہ طیارے کا ملبہ چھ سے سات کلومیٹر وسیع رقبے میں پھیلا ہوا ہے۔

انہوں نے بتایا روس کے خصوصی معائنہ کار مصر پہنچنے والے ہیں۔ طیارہ ساز کمپنی کے ماہرین بھی شہری ہوابازی کی ٹیم کے ساتھ ملکر حادثے کا سبب جاننے کی کوشش کریں گے۔

یاد رہے کہ مصر اور روس دونوں نے جہاز کی تباہی میں کسی دہشت گردی کے عنصر کو خارج از امکان قرار دیا ہے کیونکہ میڈیا کے بعض حصوں میں انتہا پسند تنظیم داعش کی جانب سے روسی مسافر طیارہ گرانے کا دعوی کیا سامنے آیا تھا۔