.

دنیا بھر میں سال نو کی تقریبات کی ایک جھلک کیمرہ کی آنکھ سے

آتشزدگی کے باوجود نئے سال کو خوش آمدید کہنا دبئی کی ہمت کا اظہار ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا بھر میں سال 2016ء کو خوش آمدید کہا جا رہا ہے۔ اس موقع پر دبئی میں برج خلیفہ کے قریب ہوٹل میں آگ لگنے سے پینتیس افراد زخمی ہو گئے۔ شہری دفاع کے عملے کی بروقت اور برق رفتار کارروائی کے بعد برج الخلیفہ میں آتش زبازی کا شاندار روایتی مظاہرہ دیکھنے میں آیا۔ دنیا کی بلند ترین عمارت رنگ اور نور میں نہا گئی، جسے دنیا بھر سے آئے ہوئے لاکھوں افراد نے براہ راست دیکھا۔

نئے سال کو خوش آمدید کہنے کے لئے بڑی تقریبات کا اہتمام تو کیا گیا لیکن ساتھ ہی ساتھ دہشت گردی کے خطرات کے باعث سخت حفاظتی انتظامات دیکھنے میں آئے جب کہ بعض جگہوں پر سال نو کی روایتی تقریبات کو منسوخ بھی کر دیا گیا۔

امریکا کے شہر نیویارک کے مشہور ٹائمز اسکوائر پر دس لاکھ سے زائد لوگوں کی موجودگی میں سال نو کو خوش آمدید کہا گیا ہے اور رات بارہ بجتے ہیں یہ پورا علاقہ رنگوں اور روشنیوں سے جگمگا اٹھا۔

جرمنی کے شہر میونخ میں پولیس نے دہشت گردی کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر دو ریلوے اسٹیشز بند کر دیے تھے لیکن انھیں چند گھنٹوں کے بعد دوبارہ کھول دیا گیا۔

حکام نے لوگوں کو بھیڑ والی جگہہ پر جانے سے گریز کرنے کی ہدایت بھی جاری کی۔

روس میں ماسکو کے مشہور زمانہ ریڈ اسکوائر کو بھی بند کر دیا گیا۔ روایتی طور پر یہاں سال نو کو گھنٹیاں بجا کر خوش آمدید کہا جاتا ہے۔

گو کہ ریڈ اسکوائر کی بندش کے بارے میں سرکاری طور پر تو کچھ نہیں بتایا گیا لیکن بظاہر یہ اکتوبر میں مصر میں روسی مسافر طیارہ مار گرائے جانے کے بعد کیے گئے حفاظتی انتظامات کا حصہ معلوم ہوتا ہے۔ روس نے شام میں بھی شدت پسندوں کے خلاف اپنی فضائی کارروائیاں شروع کر رکھی ہیں۔

انڈونیشیا کے شہر جکارتا میں دہشت گردی کے ممکنہ خطرے کے پیش نظر سکیورٹی کے سخت انتظامات دیکھنے میں آئے۔

یورپی ملک بیلجیئم کے دارالحکومت برسلز میں سال نو کی تقریبات کو منسوخ کر دیا گیا تھا۔ شہر کے میئر کا کہنا تھا کہ آتشبازی کی مرکزی تقریب کو دیکھنے کے لیے آنے والے ہزاروں افراد کی جانچ پڑتال کرنا تقریباً ناممکن ہے۔

برسلز کی پولیس کے مطابق اس نے نومبر میں پیرس میں ہونے والے دہشت گرد حملوں میں ملوث ہونے کے شبے میں دسویں شخص کو بھی گرفتار کیا ہے جبکہ چھ دیگر افراد کو سال نو کی تقریبات میں دہشت گردی کی مبینہ منصوبہ سازی کے شبے میں حراست میں لیا۔

پیرس میں روایتی طور پر آتشبازی کے ذریعے سال نو کو خوش آمدید نہیں کیا گیا لیکن محراب فتح پر لوگ جمع ہوئے اور نئے سال کو خوش آمدید کہا۔

صدر فرانسو اولاند نے سال نو کے پیغام میں کہا کہ فرانس کو ابھی دہشت گردی سے نمٹنا ہے اور دہشت گردی کا انتہائی خطرہ بدستور موجود ہے۔

برطانیہ میں لندن اور اینڈنبرگ میں شاندار آتشبازی کے مظاہروں کے ساتھ 2016ء کو خوش آمدید کہا گیا۔