.

امریکی اتحاد کی عراق اور شام میں داعش کے ٹھکانوں پر بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دولت اسلامیہ عراق وشام 'داعش' کے خلاف سرگرم فوجی اتحاد کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ اتحاد نے عراق میں داعش کی 23 اور شام میں تین املاک کو فضائی کارروائیوں میں نشانہ بنایا ہے۔

اتحاد کی ٹاسک فورس کا کہنا ہے کہ عراق میں 22 کارروائیاں عراقی حکومت کی معاونت کے ساتھ داعش کے ٹھکانوں پر کی گئی تھیں جبکہ ایک کارروائی میں اتحاد کے ناکارہ سامان کو نشانہ بنایا گیا تھا تاکہ اسے شدت پسندوں کے ہاتھ لگنے سے روکا جاسکے۔

'کمبائنڈ جوائنٹ ٹاسک فورس' کے مطابق اس حملوں میں داعش کے موصل میں سات جبکہ رمادی میں چھ ٹھکانوں پر بمباری کی گئی تھی۔ یاد رہے کہ رمادی میں عراقی افواج شہر کے مرکز پر قبضہ کرچکی ہیں اور شہر بھر میں کلئیرنس آپریشن جاری ہے۔

موصل میں اتحادی کارروائیوں کے نتیجے میں داعش کے چار 'ٹیکٹیکل یونٹس'، چھ مورچوں، چار اسمبلی ایریاز، ایک بنکر اور ایک سرنگ کو نشانہ بنایا گیا۔ اس کے علاوہ رمادی میں 16 مورچوں، 13 بھاری مشین گنوں اور ایک درجن دھماکا خیز ڈیوائسز کو نشانہ بنایا۔

بیان کے مطابق اس کے علاوہ اتحاد کی کارروائیوں میں القائم، سنجار، حدیثہ، اربیل، کسک، القیارہ اور سلطان عبداللہ کے علاقوں کو نشانہ بنایا گیا۔

اتحاد کے مطابق شام میں دو کارروائیاں عین عیسیٰ کے قریب کی گئی تھیں جبکہ ایک منبج کے قریب کی گئی تھی۔