.

کیا بغدادی عراق-شام سرحدی حملے میں زخمی ہوا؟

امریکی حکام اس خبر کی تصدیق اور تردید سے انکاری ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی اور عراقی عہدے داروں نے داعش کے خلیفہ ابوبکر البغدادی کے ایک فضائی حملے میں زخمی ہونے سے متعلق اطلاع کی تصدیق سے انکار کردیا ہے۔

امریکا کی قیادت میں داعش مخالف اتحاد کے ایک ترجمان کرس گارور نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انھوں نے داعش کے خلیفہ کے زخمی ہونے سے متعلق رپورٹ دیکھی ہے لیکن وہ اس مرحلے پر ان کی تصدیق نہیں کرسکتے ہیں۔

عراق کے شمالی علاقوں میں داعش کے خلاف جنگ میں شریک کرد اور عرب سکیورٹی عہدے داروں نے بھی اس رپورٹ کی تصدیق نہیں کی ہے۔

عراق کے السمیریہ ٹی وی چینل نے شمالی صوبے نینویٰ سے تعلق رکھنے والے ایک مقامی ذریعے کے حوالے سے اطلاع دی تھی کہ ابوبکر البغدادی اور داعش کے دوسرے لیڈر جمعرات کو امریکی اتحادیوں کے ایک فضائی حملے میں زخمی ہوگئے تھے۔یہ حملہ شام کی سرحد کے نزدیک واقع علاقے میں داعش کے ایک کمانڈ ہیڈ کوارٹرز پر کیا گیا تھا۔

اس چینل کے داعش کے خلاف جنگ میں شریک عراقی فورسز اور شیعہ سیاست دانوں کے ساتھ اچھے تعلقات استوار ہیں۔واضح رہے کہ ماضی میں بھی متعدد مرتبہ ابوبکر البغدادی کے ہلاک یا زخمی ہونے کی اطلاعات منظرعام پر آچکی ہیں لیکن ان کی مصدقہ ذرائع سے کبھی تصدیق نہیں ہوئی تھی۔

2015ء کے اوائل میں برطانوی میڈیا نے امریکا کی قیادت میں اتحادی ممالک کے لڑاکا طیاروں کے ایک فضائی حملے میں ابو بکر بغدادی کے زخمی ہونے کی اطلاع دی تھی اور ان کی ریڑھ کی ہڈی کو نقصان پہنچا تھا اور بائیں ٹانگ مبینہ طور پر ناکارہ ہوگئی تھی۔