مصر: داعش کے ہاتھوں العریش کے چرچ کا پادری قتل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر کے صوبے شمالی سیناء میں جمعرات کے روز نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے ایک قبطی پادری کو ہلاک کر دیا۔ العریش شہر میں پیش آنے والے واقعے کی ذمہ داری داعش تنظیم کی مصری شاخ نے قبول کی ہے۔

مصری وزارت داخلہ کے ایک ذمہ دار مطابق العریش کے سینٹ جارج چرچ کے پادری روفائیل موسی اپنی ذاتی گاڑی کی مرمت کے سلسلے میں شہر کے صنعتی علاقے میں موجود تھے کہ اس دوران نامعلوم مسلح افراد نے ان کو فائرنگ کا نشانہ بنا کر قتل کر دیا۔ 46 سالہ پادری شادی شدہ تھے اور ان کے دو بچے ہیں۔

واضح رہے کہ روفائیل موسی دہشت گردوں کی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے پہلے پادری نہیں ، اس سے پہلے مارچ 2012 میں بشپ قزمان اسقف اور جولائی 2013 میں پادری مینا عبود کو بھی دہشت گرد فائرنگ کر کے موت کے گھاٹ اتار چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں