کویت کا سلامتی کونسل سے ’امن مشن‘ غزہ بھجوانے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خلیجی ریاست کویت نے سلامتی کونسل میں ایک قرارداد کا مسودہ تقسیم کیا ہے جس میں عالمی ادارے سے فلسطین کے جنگ سے متاثرہ علاقے غزہ میں عالمی امن مشن بھجوانے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق کویت کی طرف سے سلامتی کونسل کے سفیروں میں تقسیم کردہ قرارداد کے مسودے میں غزہ کے عام شہریوں کی زندگیوں کو تحفظ فراہم کرنے اور عالمی امن مشن غزہ بھجوانے کی درخواست کی ہے۔

کویت نے غزہ کی پٹی کی موجودہ صورت حال کے تناظر میں کشیدگی کم کرنے کے لیے وہاں پر عالمی امن فوج تعینات کرنے کی بھی تجویز پیش کی ہے۔

اقوام متحدہ کے متعدد سفارت کاروں نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ کونسل کے ارکان آئندہ سوموار سے کویت کی قرارداد پر غور کریں گے۔

دوسری جانب اقوام متحدہ میں اسرائیلی سفیر ڈانی ڈانون نے کویت کی قرارداد کو مسترد کر دیا ہے۔ اس قرارداد میں اقوام متحدہ کےسیکرٹری جرنل انتونیو گوٹیرس سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ کونسل کے ارکان کے سامنے غزہ میں پر تشدد واقعات کے حوالے سے ایک رپورٹ 30 دن کے اندر اندر پیش کریں۔

ادھر فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس نے بھی عالمی برادری سے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کے جرائم کی روک تھام کے لیے کردار ادا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ 14 مئی کو فلسطین میں 70 یوم نکبہ اور امریکی سفارت خانے کی القدس منتقلی کے موقع پر غزہ کی پٹی میں تشدد بھڑک اٹھا تھا جس میں کم سے کم 62 فلسطینی شہید اور 3200 زخمی ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں